جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ فعال کرنیکی کوششیں تیز، جلد اہم فیصلے 

جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ فعال کرنیکی کوششیں تیز، جلد اہم فیصلے 

  

 ملتان (نیوز رپورٹر) وزیراعلی پنجاب عثمان بزدار کی ہدایت پر جنوبی پنجاب سیکرٹریٹ کو مکمل طور پر فعال کرنے کے لئے کوششیں تیز کردی گئیں ہیں اور سیکرٹریٹ کے لئے عارضی بلڈنگ کی تلاش شروع کر دی گئی ہے۔ اس سلسلے میں وزیر توانائی پنجاب ڈاکٹر اخترملک اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساؤتھ پنجاب کیپٹن (ر)ثاقب ظفرنے نیو جوڈیشیل کمپلیکس کا دورہ کیا۔سیکرٹری قانون بہادر علی خان،سیکرٹری صحت اجمل بھٹی،ڈپٹی کمشنر ملتان علی شہزاد اور ایڈیشنل سیکرٹری رضوان قدیر بھی ان کے ہمراہ تھے۔صوبائی وزیر اور ایڈیشنل چیف سیکرٹری نے جوڈیشیل کمپلیکس کے مختلف بلاکس کا جائزہ لیا اور پارکنگ ایریاز اور کانفرنس روم کا معائنہ کیا۔ وزیر توانائی پنجاب ڈاکٹراختر ملک نے اس موقع پر گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ حکومت کی خواہش ہے کہ سیکرٹریٹ کو مکمل طور پر فعال کیا جائے۔اس سلسلے میں وزیراعلی عثمان بزدار پہلے ہی ساؤتھ پنجاب کیبنٹ کمیٹی تشکیل دے چکے ہیں۔جوڈیشیل کمپلیکس کی عمارت کو ساؤتھ پنجاب سیکرٹریٹ کے طور پر استعمال کرنے بارے رپورٹ ساؤتھ پنجاب کیبنٹ کمیٹی کو ارسال کی جائے گی۔کیبنٹ کمیٹی  سفارشات وزیر اعلی کو ارسال کرے گی جو کہ حتمی فیصلہ کریں گے۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری ساؤتھ پنجاب کیپٹن (ر) ثاقب ظفر نے اس موقع پر کہا کہ ساؤتھ پنجاب سیکرٹریٹ کی مکمل فعالیت کے لئے بڑی  بلڈنگ کی اشد ضرورت ہے۔تمام محکموں کے سیکرٹریز کے دفاتر ایک عمارت میں قائم ہونے سے رابطہ کار میں اضافہ ہو گا۔انہوں نے کہا کہ نیو جوڈیشیل کمپلیکس کے حوالے سے حتمی فیصلہ وزیر اعلی پنجاب کریں گے۔سیکرٹری قانون پنجاب بہادر علی خان نے بتایا کہ حکومت نے نیو جوڈیشیل کمپلیکس میں سیکرٹریٹ قائم کرنے کا فیصلہ کیا تو بلڈنگ حوالے کردی جائے گی اور نیوجوڈیشیل کمپلیکس میں قائم عدالتوں کو یہاں سے منتقل کردیا جائے گا۔ڈپٹی کمشنر علی شہزاد نے اس موقع پر بریفنگ دیتے ہوئے بتایا کہ نیو جوڈیشیل کمپلیکس791 کنال زمین پر محیط ہے اور کمپلیکس میں بجلی،پانی، گیس اور تمام دیگر سہولیات موجود ہیں۔

وزیر توانائی

مزید :

صفحہ اول -