محاذ کھولنے کے بجائے گفت و شنیدسے ڈرون بند کرانے چاہئیں‘قانونی ماہرین

محاذ کھولنے کے بجائے گفت و شنیدسے ڈرون بند کرانے چاہئیں‘قانونی ماہرین

ؒٓلاہور(انوسٹی گیشن سیل) ملک کے قانونی ماہرین نے کہا کہ محاذ کھولنے کی بجائے گفت و شنیدسے ڈرون بند کروانے چاہیں۔امریکہ افغانستان میں من مانے نتائج اخذ کرنے میں ناکام رہا ہے۔حکمرانوں کو عوام کی آوا ز امریکی ایوانوں تک پہنچانی چاہیے۔ سابق چئرمین پاکستان بار کونسل اسلم سندھو نے کہا کہ حملے پاکستان کی مرضی سے ہو رہے ہیںاور اب محاذ کھولنے کی بجائے گفت وشنید سے ڈرون حملے بند کرانے چاہیں۔امریکہ پڑوسی ملک میں ںنتائج حاصل کرنے میں ناکام رہا ہے ہمسائے میںلگی آگ سے پاکستان جل رہا ہے۔حکومت کو عوام کی آواز امریکی ایوانوں تک پہنچاکر دباو¿ ڈالنا چاہیے کہ ہماری عوام اب ملک میں امن چاہتی ہے۔ماہر قانون دان جی اے خان طارق نے کہا کہ لڑائی جھگڑے مسائل کا حل نہیں ہوتے حکمرانوں کو امن کے راستے پر چلتے ہوئے پاکستان میں بھڑکائی جانے والی آگ کو ٹھنڈا کرنا ہو گا۔حکمرانوں کو دوغلی پالیساں بند کرتے ہوئے سچ عوام کے سامنے لانا چاہیے۔مسائل گھمبیر ہوتے جا رہے۔ملک میں امن کا قیام بہت ضروری ہے ورنہ عوام کے سڑکوں پر آنے سے حکمرانوں کو رسوائی کے علاوہ کچھ حاصل نہیں ہو گا۔

قانونی ماہرین

مزید : صفحہ اول