پولیس تشدد سے نوجوان کی ہلاکت پر لواحقین کا شدید احتجاج پولیس کیخلاف نعرے بازی

پولیس تشدد سے نوجوان کی ہلاکت پر لواحقین کا شدید احتجاج پولیس کیخلاف نعرے ...

                                                                                                                                               لاہور (ملک خےا م رفےق)سی آئی اے نواں کوٹ پولیس نے رشوت نہ ملنے پر فیروزوالاکے رہائشی بے گناہ نوجوان کو دوران تفتیش تشدد کر کے قتل کر دیا ،جرم چھپانے کی خاطر پولیس اہلکاروں نے مقتول کی نعش دریائے راوی میں پھینک دی ،جس کے خلا ف لواحقین اور اہل علاقہ کا جی ٹی روڑ پر شدید احتجاج ،ٹریفک کا نظام درہم برہم ،مظاہرین کی پولیس کے خلاف نعرے بازی ،وزیراعلی پنجاب سے فوری نوٹس لینے کا مطالبہ۔ تفصیلات کے مطابق نواحی آبادی مین بازارفیروزوالا میں رہائش پذیر محنت کش صابر حسین کے بیٹے نوجوان رضوان کو عید الاضحی سے ایک روز قبل سی آئی اے پولیس نواں کوٹ پولیس کے انسپکٹر جاوید اقبال ودیگر اہلکاروں کے ہمراہ چھاپہ مار کر چوری کے شبہ میں گرفتار کر کے لے گئے۔ نوجوان کے ساتھ دو مزید نوجوانوں کو بھی گرفتار کیا گیا بعد ازاں دو ملزموں کے خلاف پولیس نے مقدمات درج کر کے جیل روانہ کر دیا بعدازاں مذکورہ انسپکٹر جاوید اقبال اور دیگر اہلکار زیر حراست نوجوان رضوان علی کی رہائی کے بدلے اسکے ورثا سے 50ہزارروپے مبینہ طور پر رشوت طلب کر تے رہے فوری طور پر رقم کا بندوبست نہ ہونے پر پولیس نے دوران تفتیش نوجوان کو اس طرح کا تشدد کا نشانہ بنایا کہ وہ چلنے پھرنے سے قاصر ہو گیا اور شدید زخمی حالت میں پولیس کے نجی ٹارچر سیل میں دم توڑ گیا۔ پولیس اہلکاروں نے ایک منصوبے کے تحت مقتول رضوان کی نعش کو رات کے اندھیرے میں دریائے ر اوی میں پھینک دیا گیا جس کےخلا ف لواحقےن نے شدید احتجاجی مظاہرہ کیا اور ٹائروں کو آگ لگا کر روڑ بلاک کر دیا جسکی وجہ سے ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو گیا مظاہرین نے پولیس گردی کےخلاف نعرے بازی کی اور چیف جسٹس وزیر اعلی پنجاب میاں شہباز شریف سے واقعہ کا فوری نوٹس لینے کا مطالبہ کیا۔ اطلاع ملنے پر ڈی ایس پی فیروزوالا اور ڈی ایس پی نواں کوٹ پولیس کی بھاری نفری کے ہمراہ جائے وقوعہ پر پہنچ کر مظاہرین کو یقین دلایا کہ 24گھنٹے کے اندر مفرور ملزموں کو گرفتار کر لیاجائیگااور مقتول کی ہلاکت کا مقدمہ درج کر لیا گیا ہے جس پر مظاہرین منتشر ہو گئے۔انچا رج انو ےسٹی گےشن نواں کو ٹ ر ائے احسان نے رو ز نا مہ پا کستا ن سے گفتگو کرتے ہو ئے کہا کہ اغواءکا مقد مہ درج کر کے ملزما ن کو گر فتا ر کرلےا گےا ہے اور تفتےش کی جا رہی ہے ۔ابھی تک قاتل کا کنفرم نہ ہو سکا ہے۔

مزید : علاقائی