ترکمانستان کی دھمکی پر پی آئی اے نے بل اداکردیا

ترکمانستان کی دھمکی پر پی آئی اے نے بل اداکردیا
ترکمانستان کی دھمکی پر پی آئی اے نے بل اداکردیا

  

کراچی (مانیٹرنگ ڈیسک)ترکمانستان کی جانب سے وارننگ ملنے کے بعد پاکستان کی قومی ایئر لائن( پی آئی اے )نے 61 ہزار یورو کا بل ادا کردیا ہے۔

پی آئی اے کے ترجمان رفیق زرداری نے بتایا کہ ترکمانستان کی فضائی حدود کے استعمال کے لیے واجب الادا کرائے کی ادائیگی کر دی گئی ہے تاہم یہ نہیں بتایاکہ یہ بل کتنے ماہ سے واجب الاداتھا۔

ایئرپورٹ ذرائع کے مطابق پی آئی اے کو مختلف ممالک کی جانب سے فضائی حدود کے استعمال کے لیے مختص رقم کی ادائیگی اور فلائٹس کی آمدورفت کے حوالے سے دی جانے والی وراننگز کوئی نئی بات نہیں رہی، درجنوں ممالک کی فضائی حدود استعال کرتے ہیں لیکن ترکمانستان کی حکومت کی جانب سے الزام عائد کیا گیا ہے کہ وہ کئی ماہ سے کرائے کی ادائیگی کرنے سے قاصر ہے۔

پی آئی اے کے سینئر اہلکار نے غیرملکی میڈیا کو بتایا کہ اگرچہ یہ ایک خبر ہے کہ ترکمانسان نے پاکستان کو رقم کی ادائیگی نہ کرنے پر خبردار کیا ہے تاہم فضائی حدود کے استعال اور ماہانہ بلوں کی ادائیگی کا معاملہ اتنا تشویشناک نہیں اور نہ ہی اس کی وجہ سے کبھی پی آئی اے کو کسی ملک نے فضائی راستہ دینے سے انکار کیا،بعض اوقات دو ممالک کے درمیان غلط فہمی کی بنیاد پر بل کی رقم زیادہ ہوجاتی ہے کیونکہ اگر کوئی پرواز منسوخ بھی ہو جائے تو راہ داری دینے والا ملک اس سے آگاہ نہیں ہوتا اس لیے وہ متعلقہ فلائٹ کا بل بھی ماہانہ بل میں شامل کرلیتا ہے، جسے بعد میں بات چیت کے ذریعے حل کر لیا جاتا ہے۔

یادرہے کہ پی آئی اے کے تقریباً 38 جہاز دنیا کے 32 ممالک میں جاتے ہیں اور روزانہ کی بنیاد پر تقریباً 15 ہزار مسافر پی آئی اے سے سفر کرتے ہیں۔

مزید :

بزنس -