تو جہ د ے کر دودھ اورگوشت کی مقامی پیداوار بڑھ سکتی ہے، ما ہر ین لائیو سٹا ک

تو جہ د ے کر دودھ اورگوشت کی مقامی پیداوار بڑھ سکتی ہے، ما ہر ین لائیو سٹا ک

  

سرگودھا( اے پی پی ) لائیو سٹا ک اور ڈ یری ڈویلپمنٹ کے ما ہر ین نے کہاہے کہ پاکستان میں لا ئیو سٹاک کے شعبے پر بھر پو رتو جہ د ے کر دودھ اورگوشت کے مقامی پیداوار میں نمایاں اضافہ کیا

جاسکتاہے۔ماہرین نے اے پی پی کو بتایاکہ پاکستان لا ئیوسٹا ک کی دولت سے ما لاما ل ہے، اس شعبہ کا زراعت کی معیشت میں55.1فیصد حصہ ہے جو کہ جی ڈ ی پی کا 11.5فیصد بنتا ہے ،تمام مسائل کے با و جو د لا ئیو سٹا ک کی بڑھوتر ی 4.1فیصد ہے ۔ماہرین کے مطابق پا کستان میںدودھ کی پیداوار ی صلا حیت 46.44ملین ٹن ہے ،اس میں سے 16.13ملین ٹن دودھ گا ئیوں اور 28.69ملین ٹن دودھ بھینسوں سے حاصل ہوتا ہے ۔ 15فیصد دودھ ایک جگہ سے دوسر ی جگہ منتقل کر نے کی و جہ سے خراب ہو جاتا ہے، 5فیصد دودھ بچھڑے پیتے ہے ،دودھ کا 71فیصد حصہ دیہاتی اور 29فیصد شہروں سے دستیا ب ہے۔ پاکستان میں لا ئیو سٹاک پر بھر پو رتو جہ د ے کر دودھ کا سفید انقلا ب بر پا کیا جا سکتا ہے ایک اندازے کے مطا بق اس شعبہ سے 4کروڑ افراد منسلک ہے پا کستان جا نو روں کی تعدا د کے حوا لہ سے د نیا میں تیسرے نمبر پر ہے جبکہ دودھ کی پیداوار کے حو الے سے پانچویں نمبر پر ہے ۔

مزید :

کامرس -