واہگہ حملے کی منصوبہ بندی کراچی میں ہوئی ،دھماکہ خیز مواد افغان بھارت ٹرانزٹ ٹریڈ کے ٹرک میں لایا گیا

واہگہ حملے کی منصوبہ بندی کراچی میں ہوئی ،دھماکہ خیز مواد افغان بھارت ٹرانزٹ ...

  

  لا ہور (شعیب بھٹی ) حساس ادارے سانحہ واہگہ کے اصل ذمہ داران کے قریب پہنچ گئے، دھماکہ افغان انڈیا ٹرانزٹ کی آڑ میں کیا گیا۔دھماکہ خیز مواد اور جیکٹس افغان ٹرانزٹ ٹریڈ کے ٹرک کے ذریعے لائے گئے جبکہ واہگہ کے علاقے سے دو دہشتگردوں کو بھی گرفتار کیا گیا ہے۔ذرائع کا کہنا ہے کہ واہگہ دھماکے میں استعمال ہونے والا دھماکہ خیز مواد اور خود کش جیکٹس افغان انڈیاٹرانزٹ ٹریڈ کے ٹرک کے ذریعے لایا گیا اور اس مقصد کے لیے دھماکے کے لیے برڈ فورڈ طرز کے ٹرک کا استعمال کیا گیا ہے لیکن دھماکہ خیز مواد اور جیکٹس کو واہگہ کسٹم کلئیرنس تک پہنچنے سے پہلے ہی اتار لیا گیا۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ واہگہ تک آنے والے ٹرکوں کی چیکنگ کا گیٹ تک صرف مینول انتظام ہے، جی ٹی روڈ پر سفر کے دوران ٹرکوں کو صرف مینول ہی چیک کیا جاسکتا ہے۔ بی آر بی نہر عبور کرتے وقت بھی رینجرز اہلکار ٹرکوں کی مینول انداز سے ہی چیکنگ کرتے ہیں جبکہ ٹرکوں کی سکیننگ کا باقاعدہ سسٹم واہگہ بارڈ پر کسٹم کلیئرنس ٹرمینل پر موجود ہے۔ انٹیلی جنس ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ واہگہ دھماکے کے شبہ میں دو مبینہ دہشتگرد وں کوگرفتار کیا گیا ہے مبینہ دہشتگردوں میںسے ایک افغان باشندہ بھی شامل ہے۔ گرفتار شدگان نے خودکش بمبار کو واہگہ پہنچانے میں مدد کی تھی،دونوں کی گرفتاری واہگہ کے قریب عمل میں آئی۔ذرائع نے اس بات کا بھی دعویٰ کیا ہے کہ حساس اداروں کی جانب سے واہگہ کے علاقے کی جیو فینسنگ بھی کی گئی۔ جیو فینسنگ میں دھماکے سے قبل اور بعد کی3ہزار موبائل کالز کا ڈیٹا چیک کیا گیا اور ایک درجن فون کالز کو مشتبہ قرار دیا گیا مشکوک کالز کیلئے دو مختلف موبائل کمپنیوں کی سمز استعمال کی گئیں۔فون کال ڈیٹا اور تفتیش کے نتیجہ میں 23 افراد کو حراست میں لیا جا چکا ہے گرفتار شدگان میں تجارتی ٹرکوں کے لوڈر بھی شامل ہیں۔ حساس اداروں کی ایک اور کارروائی راوی روڈ پر گڈز ٹرانسپورٹ کے ا ڈے پر کی گئی اور 2 افرادکو گرفتار کیا گیا۔گڈز ٹرانسپورٹ کے اڈے پر افغانستان سے ٹرک فروٹ اور لکڑی لے کر آتے ہیں، اڈے کے منیجراور افغانی سیکورٹی گارڈ کو حراست میں لیا گیا ۔

لاہور ، راولپنڈی ، ملتان، ( کرائم سیل،خصوصی رپورٹ)سانحہ واہگہ بارڈر کے بعد آج یوم عاشور پر تاریخ کے سخت ترین حفاظتی انتظامات کئے گئے ہیں خفیہ ایجنسیوں اور امن و امان قائم رکھنے والے اداروں نے ملک بھر میں سرچ آپریشن کے دوران ملتان سے ایک خود کش حملہ آور ، راولپنڈی سے دو دہشتگرد اور لاہور سے غیر ملکیوں سمیت درجنوں افراد کو گرفتار کر لیا ۔ اطلاعات کے مطابق حساس اداروں نے راوی روڈ کے مبینہ دہشتگرد 17سالہ عبد الرحمن کا خاکہ جاری کیا تھا جسے لاہور پولیس نے ملتان میں چھاپہ مار کر گرفتار کر لیا اور اسے نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا ۔ انویسٹی گیش ٹیم اس دہشتگرد سے تفتیش کر رہی ہے دوسری طرف حساس اداروں کی اطلاع پر راولپنڈی سے بھی دو مبینہ دشتگردوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے ۔ذرائع کے مطابق دونوں دہشتگردوں کا تعلق کالعدم تحریک طالبان سے ہے اور دونوں عاشورہ محرم کے جلوسوں کو نشانہ بنانا چاہتے تھے ، دونوں دہشتگردوں کو نامعلوم مقام پر منتقل کر دیا گیا ہے اور ان سے تفتیش کی جا رہی ہے ۔ حفاظتی اقدامات کیلئے حساس علاقوں میں موبائل فون سروس بھی آج بند رہے گی جبکہ لاہور ، راولپنڈی ، کوئٹہ ، ملتان ، کراچی اور دوسرے کئے شہروں میں دفعہ 144نافذ کر کے ڈبل سواری پرپابندی لگا دی گئی ہے ۔ گزشتہ روز ڈبل سواری کی پابندی کی خلاف ورزی پر سینکڑوں افراد کو گرفتار کر لیا گیا ۔ڈی آئی جی کراچی ساﺅتھ عبدالخالق شیخ نے انتباہ جاری کیا ہے کہ یوم عاشور پر کراچی میں شدید سکیورٹی خدشات ہیں اور عاشور کے مرکزی جلوس پر خود کش حملے کا خدشہ ہے جس میں دہشتگرد باردو سے بھری گاڑی کے ذریعے جلوس کو نشانہ بنا سکتے ہیں ، انہوں نے بتایا کہ فول پروف سکیورٹی انتظامات کے لئے پولیس کے 15000اور رینجرز کے 5ہزار جوان تعینات کئے گئے ہیں جبکہ جلوس کے راستوں میں سی سی ٹی وی کیمرے بھی نصب کئے گئے ہیں جبکہ جلوس کی نگرانی ہیلی کاپٹرز کے ذریعے بھی کی جائے گی ۔ وفاقی وزیر داخلہ کے مطابق چاروں صوبائی حکومتوں کو یوم عاشور پر سخت ترین حفاظتی انتظامات کی ہدایات جاری کر دی گئی ہیں جبکہ تمام بڑے شہروں میں جلوسوں کی نگرانی ہیلی کاپٹرز کے ذریعے کی جائیگی ۔ دریں اثناءوزیر اعلی پنجاب شہباز شریف کو آئی جی مشتاق سکھیرا اور صوبائی وزیر داخلہ کرنل (ر)شجاع خانزادہ لمحہ بہ لمحہ ہاٹ لائن کے ذریعے رپورٹ دینگے جبکہ ڈی سی او ، کمشنراور قومی اور صوبائی اسمبلی کے ارکان مرکزی کنٹرول روم میں بیٹھ کر صوبائی دارلحکومت میں روٹس کی مانیٹرنگ کرینگے اور اپنی رپورٹس سے وزیر اعلی کو آگاہ کرتے رہیں گے محرم الحرام کے سلسلہ میں پولیس کی طرف سے ضلع فیصل آباد میں مختلف علاقوں میں مشکوک افراد کی تلاش کیلئے سرچ آپریشن کیا گیا ذرائع کے مطابق ضلع فیصل آباد میں کسی بھی قسم کی دہشت گردی کے خدشہ کی روک تھام کیلئے فیصل آباد پولیس نے مشتبہ آبادیوں اور ہوٹلوں میں سرچ اپریشن کیا اس دوران دو درجن مشتبہ افراد کو حراست میں لے لیا گیا متعدد افراد کو تفتیش کے دوران مکمل طور پر معلومات درست ہونے پر رہا کر دیا گیا چند ایک مشتبہ افراد کو حراست میں رکھ کر مزید تفتیش کا عمل جاری ہے ۔

کراچی ( مانیٹرنگ ڈیسک ) واہگہ بارڈر دھماکے کے بعد حساس اداروں نے اہم انکشافات کر دیے۔تفصیلات کے مطابق حساس اداروں کے مطابق واہگہ بارڈر پر ہونے والے حملے کی منصوبہ بندی کراچی میں کی گئی جس میں کالعدم تنظیم جند اللہ اور تحریک طالبان کے ملوث ہونے کا شبہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ذرائع کے مطابق حساس اداروں نے یہ بھی انکشاف کیا ہے کہ واہگہ بارڈر دھماکے کی منصوبہ بندی طالبان کمانڈر گل امان نے کی جو اس وقت افغانستان میں ہے۔ذرائع کا یہ بھی کہنا ہے کہ اس حملے کے بعد حساس اداروں نے عاشورہ کے تین دن سیکیورٹی مزید سخت کرنے کی بھی سفارش کی ہے جبکہ ڈی آئی خان اور بنوں میں بھی خصوصی طور پر سیکورٹی سخت کرنے کا بھی کہا گیا ہے۔واضح رہے اس سے قبل ڈی آئی خان میں موٹر سائیکل چلانے پر بھی پابندی عائد کی گئی ہے جس کی وجہ عاشورہ محرم میں سیکیورٹی کو مزید سخت کرنا ہے۔

مزید :

صفحہ اول -