شادی نہ کرنے پر سابقہ محبوب کے خلاف مقدمہ

شادی نہ کرنے پر سابقہ محبوب کے خلاف مقدمہ

  

ہانگ کانگ(نیوزڈیسک)ہانگ کانگ کے ایک امیر آدمی نے اپنی سابقہ محبوبہ کی جانب سے شادی کے انکار کے بعد اسے عدالت لے جانے کا فیصلہ کیا ہے۔ 50سالہ چینگ نامی امیر انسان نے کافی سال قبل 17سالہ لڑکی سے ملنا شروع کیا اور یہ سلسلہ دو سال تک چلا جس کے دوران چینگ نے اپنی محبوبہ کو قیمتی تحائف، نقدی رقم اور نئی سپورٹس کار بھی لے کر دی۔ اس تعلق کا چینگ کی ذاتی زندگی پر برا اثر پڑا اور اس کی اپنی بیوی سے علیحدگی بھی ہوگئی اور اسے اپنی بیوی کو ہرجانے کے طور پر بھاری رقم بھی دینی پڑی۔ اپنا یہ تعلق ختم کرکے وہ اپنی محبوبہ کی طرف متوجہ ہوا اور اس سے شادی کی خواہش کا بھی اظہار کیا لیکن اس لڑکی نے شادی سے انکار کرتے ہوئے کہا کہ اب وہ اس سے محبت نہیں کرتی ہے۔چینگ کو بعد میں معلوم ہوا کہ اس کی محبوبہ نے کسی اور کے ساتھ اپنا گھر بسا لیا ہے اور اس سال اپریل میں اس کے ہاں بچے کی پیدائش بھی ہوئی ہے۔یہ بات سن کر وہ سیخ پاء ہوا اور اس نے عدالت سے رجوع کرتے ہوئے کہا ہے کہ وہ تمام پیسہ جو اس نے اپنی سابقہ محبوبہ کو دیا ، وہ تمام ادھار کے طور پر دیا لہذا اب اسے تمام رقم سود سمیت دلوائی جائے اور بطور ہرجانہ اسے چھ لاکھ امریکی ڈالر بھی دلوائے جائیں۔ تاہم چینگ کی سابقہ محبوبہ نے عدالت میں جوابی دعویٰ دائر کرتے ہوئے موقف اپنایا کہ اس نے اپنی جوانی کے قیمتی سال چینگ کو دئیے ہیں اور وہ سال اسے واپس کئے جائیں۔ عدالت نے ابھی اس مقدمے کا فیصلہ نہیں کیا۔

مزید :

صفحہ آخر -