کامونکے کے گاﺅں تمبولی کے باپ بیٹا بھی واہگہ بارڈر دھماکے میں جاں بحق ہوئے

کامونکے کے گاﺅں تمبولی کے باپ بیٹا بھی واہگہ بارڈر دھماکے میں جاں بحق ہوئے

  

کامونکے (نمائندہ پاکستان) واہگہ بارڈر پر خودکش حملے میں ایک ہی خاندان کے دو افراد جاں بحق دو شدید زخمی جبکہ ان کے عزیز وں کے چار افراد بھی جاں بحق ہوگئے ،تفصیل کے مطابق کامونکے کے نواحی گاﺅں تمبولی کا رہائشی ر محمد رفیق جوکہ سات بچوں کا باپ تھا اپنے مر حوم ہم زلف کے سالانہ ختم میں شرکت کےلئے واہگہ گاﺅں گیا ہو ا تھا ختم کے بعد نزدیک ہی پر یڈ گراونڈ میں پریڈ دیکھنے چلے گئے جس کے ختم ہونے کے بعد واپس نکلتے ہو ئے خود کش دھماکہ کی زد میں آ کر محمد رفیق اور اس کا 12سالہ بیٹا مظہر،اس کے دوسالے پرویز اور عبدالستا ر جبکہ عبدالستار کی اہلیہ حمیرا اور اس کا اڑھائی سالہ بیٹامبشر جا ںبحق ہو گئے اور محمدرفیق کا ایک بیٹا حیدر اور بیٹی کرن شدید زخمی ہوگئے زخمیوں کو طبی امداد کے لیے مقامی ہسپتال پہنچادیا گیا جبکہ محمدرفیق اور اس کے بیٹے مظہر کی نعشوں کو ان کے آبائی گاﺅں تمبولی میں لایا گیا نعشوں کے گاﺅں میں پہنتے ہی پورے گاﺅں میں کہرام مچ گیا جن کی نماز جنازہ ان کے آبائی گاوں تمبولی میں ادا کر کے سینکڑوں افراد کی موجو دگی میں سپرد خاک کر دیا گیا ، افسوسناک واقعہ میں ایک بیٹا اور بیٹی زخمی ہیں، مذکورہ ہلاکتوں کی اطلاح جنگل میں آگ کی طرح کامونکے اور گر دو نواح میں پھیل گئیں لیکن نماز جنازہ میں کو ئی سرکاری اور سیاسی شخصیت شامل نہیں ہو ئی ۔

مزید :

علاقائی -