منشیات گروہوں کے لئے کام کرنے والے ملازمین کے تما م جسم پر’ٹیٹو‘ کیوں بنائے جاتے ہیں؟ایسی وجہ کہ آپ سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے

منشیات گروہوں کے لئے کام کرنے والے ملازمین کے تما م جسم پر’ٹیٹو‘ کیوں بنائے ...
منشیات گروہوں کے لئے کام کرنے والے ملازمین کے تما م جسم پر’ٹیٹو‘ کیوں بنائے جاتے ہیں؟ایسی وجہ کہ آپ سر پکڑ کر بیٹھ جائیں گے

  

نیویارک(نیوزڈیسک) آپ نے اکثر دیکھا ہوگا کہ منشیات کے گروہوں میں کام کرنے والے لوگوں کے جسم پر ’ٹیٹو‘بنے ہوتے ہیں۔اکانامسٹ کے میکسیکو سٹی کے بیوروچیف ٹام وین رائٹ نے اس راز سے پردہ اٹھاتے ہوئے کہا ہے کہ اس طریقے سے کارٹیلز کو اپنے ملازمین کو کنٹرول کرنے میں آسانی ہوتی ہے ، ہرملازم کے چہرے پر مالک کا نام لکھا ہوتا ہے اوراور ٹیٹوز میں تفاوت ہونے کی وجہ سے ملازمین کو نئی نوکری ڈھونڈنے میں مشکل ہوتی ہے۔اس کا کہنا ہے کہ کئی گینگز ایسے ہوتے ہیں جو ان لوگوں کو صرف اسی صورت میں جوائن کرنے کی اجازت دیتے ہیں کہ اگر ان کا نام چہرے پر لکھوایا جائے۔”یہ ایک قسم کا برانڈ ہے جو یہ مالک اپنے ملازمین کے جسم پر لکھوادیتے ہیں۔“کچھ لوگ یہ ٹیٹوز اپنے جسم پر بنواکرفخر محسوس کرتے ہیں اور اس کا مطلب یہ ہوتا ہے کہ اب یہ لوگ اس مخصوص گینگ سے وابستہ ہیں۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -