دنیا کا واحد آدمی جس کی 4 ٹانگیں ہیں

دنیا کا واحد آدمی جس کی 4 ٹانگیں ہیں
دنیا کا واحد آدمی جس کی 4 ٹانگیں ہیں

  

نئی دلی (نیوز ڈیسک) قدرت کے کام انسان کے محدود فہم سے بالاتر ہیں، یہی وجہ ہے کہ ہمیں بسااوقات ایسے مناظر دیکھنے کو ملتے ہیں کہ ذہن جنہیں دیکھ کر بھی ماننے کو تیار نہیں ہوتا۔ ایک ایسی ہی مثال بھارتی ریاست اترپردیش سے تعلق رکھنے والا 22 سالہ نوجوان ارون کمار ہے جو عام انسانوں کے برعکس دو کی بجائے چار ٹانگوں کا مالک ہے۔ ارون پیدا ہی چار ٹانگوں کے ساتھ ہوا تھا ،جن میں سے دو اس کی پشت کے زیریں حصے سے جڑی ہوئی ہیں اور اس کی عمر بڑھنے کے ساتھ ان اضافی ٹانگوں کی جسامت بھی بڑھتی چلی گئی۔

35 برس تک حاملہ رہنے والی خاتون منظر عام پر آگئی، پوری دنیا کے ڈاکٹر گھبرا کر رہ گئے

میل آن لائن کی رپورٹ کے مطابق ارون کا کہنا ہے کہ دو اضافی ٹانگیں اس کے لئے کسی آسانی کی بجائے بے پناہ تکلیف کا سبب ہیں کیونکہ ان کی وجہ سے اسے چلنے پھرنے اور بیٹھنے میں بے پناہ مشکلات کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ بچپن سے ہی وہ یہ خواب دیکھتا رہا ہے کہ اسے اضافی ٹانگوں سے نجات مل جائے اور وہ بھی نارمل انسانوں کی طرح زندگی گزارنے کے قابل ہوسکے۔ انتہائی غریب گھرانے سے تعلق رکھنے والے اس نوجوان کی یہ آرزو اب تک پوری نہیں ہوسکی، جس کے بعد اس نے بالآخر سوشل میڈیا کا رُخ کرلیا ہے اور ایک ویڈیو میں اپنی حالت زار بیان کرتے ہوئے مدد کی اپیل کی ہے۔ ارون کی یہ دردناک ویڈیو دیکھنے کے بعد دلی کے فورٹس ہسپتال کے ڈاکٹروں نے اس سے رابطہ کیا ہے اور اس کے ابتدائی ٹیسٹ کئے ہیں تاکہ یہ جائزہ لیا جاسکے کہ کس حد تک اس کی مدد ممکن ہے۔

ارون نے اپنی اپیل سنی جانے پر خوشی کا اظہار کرتے ہوئے کہا”اگر میرا آپریشن کیا جائے اور ڈاکٹر میری اضافی ٹانگیں کاٹنے میں کامیاب ہوجائیں تو میں بھی عام انسانوں کی طرح زندگی گزارسکوں گا۔ میں بھی آرام سے چل پھرسکوں گا اور دوسروں کی طرح زندگی سے لطف اندوز ہوسکوں گا۔“ اس کی والدہ کوکیلا دیوی نے مقامی میڈیا سے بات کرتے ہوئے بتایا ”جب ارون کی پیدائش ہوئی تو اس کی اضافی ٹانگوں کی وجہ سے زچگی میں شدید مشکلات پیش آئیں، جب وہ پیدا ہوا تو اس کی چاروں ٹانگیں برابر جسامت کی تھیں، لیکن بعدازاں پچھلی دو ٹانگوں کی بڑھوتری سست پڑگئی۔“ ان کا کہنا تھا کہ بچپن میں ڈاکٹروں نے اس کی صحت کو لاحق خطرات کی بنا پر اس کا آپریشن کرنے سے انکار کردیا۔ انہوں نے اس خواہش کا اظہار کیا کہ اب کوئی درد دل رکھنے والا ان کی مد د کرے اور ان کے بیٹے کا آپریشن کرکے اسے اس عذاب سے نجات دلادے۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -