اساتذہ کی کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے مانیٹرنگ سسٹم متعارف

اساتذہ کی کارکردگی کا جائزہ لینے کیلئے مانیٹرنگ سسٹم متعارف

  

لاہور(خبرنگار) پنجاب حکومت نے معیار تعلیم بہتر بنانے اور ٹیچرز کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے سخت ترین مانیٹرنگ سسٹم متعارف کروا دیا ہے جس کے تحت فری ہیلپ لائنکا آغاز کیا گیا ہے، جس میں سکولوں کے مین گیٹوں پرٹال فری نمبرز آویزاں کیے جا رہے ہیں، پہلے مرحلہ میں لاہور ، فیصل آباد، گوجرانوالہ، ملتان اور راولپنڈی کے اضلاع میں اس منصوبے پر عمل درآمد کیا جائے گا۔ تفصیلات کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب کے حکم پر سرکاری تعلیمی اداروں میں تعلیم کے معیار کو مزید بہتر بنانے کا فیصلہ کیا گیا ہے جس میں سکولوں کے مین گیٹوں کے باہر ٹال فری نمبرز آویزاں کیے جا رہے ہیں جس سے سکولوں میں تعلیم کے معیار اور اساتذہ کی کاکردگی کا جائزہ لینے میں مدد ملے گی۔ محکمہ تعلیم کے ذرائع کے مطابق وزیر اعلیٰ پنجاب کے سکولوں میں ’’ مار نہیں پیار‘‘ اور ’’ پڑھو پنجاب بڑھو پنجاب‘‘ کے سلوگن پر عملدرآمد کو یقینی بنایا جا رہا ہے جس کے تحت صوبے بھر کے سرکاری سکولوں میں تعلیمی معیار اور اساتذہ کی کارکردگی کا جائزہ لینے کے لئے سخت ترین مانیٹرنگ سسٹم متعارف کروا دیا گیا ہے جس کے تحت سکولوں کی کارکردگی اس جدید نوعیت کے سسٹم کے تحت چیک کی جاسکے گی جس میں بچوں اور والدین کی سہولت کے لئے سرکاری سکولوں کے باہر ہیلپ لائن کے طور پر ٹال فری نمبرز آویزاں کیے جا رہے ہیں جس میں پہلے مرحلہ میں لاہور، گوجرانوالہ، فیصل آباد، ملتان اور راولپنڈی کے اضلاع میں واقع سرکاری سکولوں میں ہیلپ لائن قائم کی جائے گی جس میں سکولوں میں اساتذہ کی حاضری ، سکولوں میں صفای کی صورتحال اور تعلیم کے معیار کا جائزہ لیا جا سکے گا اور بچوں سمیت والدین ٹال فری نمبر پر کال کر کے محکمہ تعلیم کے اعلیٰ حکام کو شکایت کرسکیں گے۔ جس کے فوری بعد ضلعی مانیٹرنگ ٹیمیں حرکت میں آ جائیں گئیں اور ٹال فری نمبر پر رابطہ کرنے کے 15 منٹ کے اندر اندر شکایت کو دورکیا جائے گا اور اس کے ساتھ سکولوں کے ہیڈ ماسٹروں کے خلاف بھی شکایت سامنے آنے پر کارروائی کی جائے گی۔ اس حوالے سے سیکرٹری تعلیم عبدالجبار شاہین کا کہنا ہے کہ اس سے تعلیمی معیار میں بہتری اور اساتذہ کی کارکردگی کا جائزہ لینے میں مدد ملے گی۔ بچوں کے ساتھ والدین بھی شکایت درج کروا سکیں گے جس پر فوری عملدرآمد کیا جائے گا۔

مزید :

صفحہ آخر -