پکڑے گئے بھارتی سفراء کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھایا جائے،عسکری ماہرین

پکڑے گئے بھارتی سفراء کا معاملہ عالمی سطح پر اٹھایا جائے،عسکری ماہرین

  

لاہور(محمد نواز سنگرا)بھارتی سفارتکاروں کاتخریب کاری میں ملوث ہونے کا انکشاف سفارتی آداب کے منافی ہے۔پاکستان معاملے کو عالمی سطح پر اٹھائے ۔معلومات کے تبادلے میں حد سے آگے نہیں جانا چاہیے۔حکومتیں شکوک کی بنیاد پر سفارتکاروں کو ملک سے نکال سکتی ہیں کارروائی نہیں کر سکتیں۔مستقل وزیر خارجہ نہ ہونے کی وجہ سے سفارتی مسائل سامنے آ رہے ہیں ۔ان خیالات کا اظہار ملک کے عسکری ماہرین نے روز نامہ پاکستان سے گفتگو کرتے ہوئے کیا ہے۔ائیر مارشل (ر)شاہد ذوالفقار نے کہا کہ سفارتکار تمام تر ملکی حالات پر نظر رکھتے ہیں لیکن زیادہ خفیہ معلومات تک رسائی نہیں ہونی چاہئے۔تخریب کاری کا شبہ ہونے پر سفارتکاروں کو نکالا جا سکتا ہے جس کے بدلے وہ ملک دوسرے سفارتکار بھیج دیتا ہے۔سفارتی آداب کا خیال رکھتے ہوئے کسی دوسرے ملک میں رہنا چاہیے۔جنرل(ر)جمشید ایاز نے کہا کہ اس بات میں شک و شبہ نہیں ہے کہ بھارتی سفارتکار تخریبی سرگرمیوں میں بھی ملوث ہوتے ہیں حکومت پاکستان کو ذمہ داروں کے خلاف کارروائی کرنی چاہیے اور معاملے کو دنیا کے سامنے اٹھانا چاہیے۔جنرل(ر)راحت لطیف نے کہا کہ مستقل وزیر خارجہ نہ ہونے کی وجہ سے پاکستان میں سفارتکاری زوال کا شکار ہے ۔حکومت پاکستان فیصلے کرنے میں سست ہے ۔سفارتی اہلکاروں کی تعیناتی کیلئے حکومتیں پہلے فہرستوں کا تبادلہ کرتی ہیں جس کے بعد نام فائنل کیے جاتے ہیں ۔بھارتی سفارتکاروں کی تخریبی سرگرمیاں بہت پرانی بات ہے حکومت کو فوراً کارروائی کرنی چاہیے۔برگیڈئیر(ر)اسلم گھمن نے کہا کہ دنیا بھر میں سفارتی اہلکار دہشتگردی میں ملوث نہیں ہوتے لیکن بھارت اپنے سفارتکاروں کو دہشتگردی میں استعمال کر رہا ہے جس کا پاکستان کو دنیا کے سامنے احتجاج ریکارڈ کرانا چاہیے۔بھارتی سفارتکاروں کی تخریبی سرگرمیاں سفارتی آداب کے منافی ہے ۔بھارت کشمیر سے توجہ ہٹانے کیلئے چالیں چل رہا ہے۔

عسکری ماہرین

مزید :

صفحہ آخر -