عمرہ پر اضافی2ہزار ریال کو ترکی ،مصر اور مراکش نے مسترد کر دیا

عمرہ پر اضافی2ہزار ریال کو ترکی ،مصر اور مراکش نے مسترد کر دیا

  

لاہور(ڈویلپمنٹ سیل)سعودی حکومت کی طرف سے دنیا بھر سے عمرہ کی سعادت حاصل کرنے کے لیے حرمین شریفین آنے والوں پراضافی دو ہزار ریال ٹیکس کے نفاذ کو ترکی ،مصر اور مراکش نے مسترد کر دیا ،دو ہزار ریال کی واپسی تک عمرہ زائرین نہ بھیجنے کا اعلان ،ترکی،مصر اور مراکش کے چیمبر آف کامرس نے بھی عمرہ کمپنیوں کی طرف سے کیے جانے والے بائیکاٹ کی حمایت کر دی اکتوبر،نومبر میں عمرہ ویزہ گزشتہ سال سے 60فیصد کم ہو گیا،پاکستان کے31اکتوبر تک صرف 30ہزار ویزے لگے ہیں،بھارت کے22ہزار،ملیشیاء کے ساڑھے سات ہزار،انڈونیشیاء کے ساڑھے پانچ ہزار،ترکی کے صرف 1833،متحدہ عرب امارات 1255،سری لنکا ایک ہزار،ساوتھ افریقہ 813،لندن 384، امریکہ279،سنگا پور107،اومان55، لبنان44،مراکو44ویزے جاری ہوئے ہیں دو ماہ میں لگنے والے عمرہ ویزے گزشتہ سال سے 60فیصد سے بھی کم ہیں ۔ترکی،مراکش،لبنان،مراکو،مصر کی بڑی کمپنیوں نے دو ہزار ریال کا فیصلہ مسترد کرتے ہوئے کہا ہے کہ سعودی حکومت اپنے فیصلے میں ترمیم کرے اس سے بہت بڑا نقصان ہورہا ہے۔

مزید :

صفحہ آخر -