لاہور ہائیکورٹ میں 14ججوں کے تقرر کی منظوری، سفارشات پارلیمانی کمیٹی کو ارسال

لاہور ہائیکورٹ میں 14ججوں کے تقرر کی منظوری، سفارشات پارلیمانی کمیٹی کو ارسال

  

لاہور(نامہ نگار خصوصی )جوڈیشل کمیشن نے لاہور ہائی کورٹ میں 14 نئے ججز کے تقرر کی منظوری دیتے ہوئے اپنی سفارشات پارلیمانی کمیٹی کو بھجوا دی ہیں۔ عدالت عالیہ کے مجوزہ نئے ججوں میں 4سیشن جج اور 10وکلاء شامل ہیں۔ ان وکلاء میں سے 5اس وقت لاء آفیسرز کے طور پر کام کررہے ہیں ۔جوڈیشل کمیشن نے جن ناموں کی منظوری دی ہے ان میں سیشن جج قصور مجاہد مستقیم احمد، سیشن جج گجرات طارق افتخار احمد، سپیشل جج انسداد منشیات عبدالستاراور سیشن جج گوجرانوالہ حبیب اللہ عامرشامل ہیں جبکہ وکلاء میں سے محمد بشیر پراچہ ، ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل اسجد جاوید گورال، اے این ایف کے لیگل ایڈوائزر طارق سلیم شیخ، جواد حسن،ایڈیشنل پراسکیوٹر جنرل احمد رضا گیلانی،ڈپٹی اٹارنی جنرل محمد مزمل اختر شبیر، اسسٹنٹ ایڈووکیٹ جنرل مدثر خالد عباسی ، عبدالرحمن اورنگزیب( بہاولپور)، محمد علی (راولپنڈی )اور عبدالعزیز (راولپنڈی )ایڈووکیٹس کو لاہور ہائی کورٹ میں جج مقرر کرنے کی منظوری دی گئی ہے ۔جوڈیشل کمیشن کا اجلاس چیف جسٹس پاکستان مسٹر جسٹس انور ظہیر جمالی کی سربراہی میں ہوا جس میں سپریم کورٹ کے سینئر ترین جج مسٹر جسٹس میاں ثاقب نثار، مسٹر جسٹس آصف سعید کھوسہ، مسٹر جسٹس امیر ہانی مسلم، مسٹر جسٹس اعجاز افضل خان، سابق جج سپریم کورٹ جاوید اقبال، چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس سید منصور علی شاہ، سینئر ترین جج لاہور ہائی کورٹ مسٹر جسٹس شاہد حمید ڈار، وفاقی وزیر قانون زاہد حامد، اٹارنی جنرل اشتر اوصاف، ممبر پاکستان بار کونسل یاسین آزاد، ممبر پنجاب بار کونسل جاوید ہاشمی اور صوبائی وزیر قانون پنجاب نے شرکت کی۔اجلاس میں چیف جسٹس لاہور ہائی کورٹ سید منصور علی شاہ کی جانب سے پیش کردہ ناموں کی متفقہ طور پر منظوری دی گئی۔یاد رہے کہ روزنامہ پاکستان عدالت عالیہ کے نئے ججوں کے مجوزہ ناموں کی فہرست کے بارے میں خبر9اکتوبر کو شائع کرچکا ہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -