پنڈی بھٹیاں ،شدید دھند کے باعث 13گاڑیاں آپس میں ٹکرا گئیں ،16جاں بحق،146زخمی

پنڈی بھٹیاں ،شدید دھند کے باعث 13گاڑیاں آپس میں ٹکرا گئیں ،16جاں بحق،146زخمی

  

حافظ آباد،سکھیکی(نامہ نگار،ڈسٹرکٹ رپورٹر+نمائندہ پاکستان،نمائندہ خصوصی)موٹروے ایم ٹو پر سکھیکی کے قریب شدید دھند میں 13 سے زائد مسافر بس، ٹرک ،مسافر وین اورگاڑیوں میں تصادم اس میں 16مسافر جاں بحق جبکہ 146افراد شدیدزخمی ہو گئے شدید زخمیوں کو ٹی ایچ کیو اہسپتال پنڈی بھٹیاں اور سکھیکی ،حافظ آباد کے ہسپتالوں میں پہنچایا گیا جبکہ دس سے زائد شدید زخمیوں کو الائیڈ اہسپتال فیصل آباد ریفر کر دیا گیا حادثہ کے عینی شاہدوں کے مطابق تصادم کی آوازیں سنی گئی حادثہ شدید دھند میں ایک لوڈ ٹرک کے کھڑے ہونے کے باعث پیچھے سے آنے والی مسافر بس اور مسافر وین ،ٹرک ،کاریں اس سے ٹکرا گئیں حادثہ میں شدید زخمیوں میں چمن وقاص،طاہر احمد،جہاں زیب،ارشاد،نوارالعادم ،شفقت،احمد علی،نواز،اشرف وغیرہ شامل ہے تمام افراد کا تعلق پشاور،مانسہرہ ،سے ہے جبکہ تبلیغی جماعت کے افراد بس اور ٹرکوں میں سوار ہو کر پشاورسمیت دیگر شہریوں سے رائے ونڈ لاہور اجتماع میں شرکت کرنے کیلئے جا رہے تھے اور اس قیامت خیز حادثہ میں ہلاک ہونے والوں اور زخمیوں میں زیادہ تبلیغی جماعت کے افراد شامل تھے ٹی ایچ کیواہسپتال میں جب زخمیوں کو لائے گیا تو قیامت کا سماتھا اس موقع پر ضلعی انتظامیہ بھی موقع پر پہنچ کئی مگر تحصیل ہیڈ کواٹر پنڈی بھٹیاں کے اہم پوائنٹ پر ریسکیو 1122اور ٹراما سنٹر کا نہ ہونے سے زخمیوں کوگھنٹوں امداد جاری رکھی گئی ریسکیو1122نہ ہونے کی وجہ سے زخمیوں کو اہسپتال میں ٹرکوں پر منتقل کیا جاتا رہاشہریوں نے حکومت سے مطالبہ کیا ہے کہ پنڈی بھٹیاں میں ریسکیو1122کا قیام عمل میں لائے جائے۔گورنر پنجاب محمد رفیق رجوانہ اور وزیر اعلیٰ پنجاب میاں محمد نواز شریف نے اس حادثے پر گہرے افسوس کا اظہار کرتے ہوئے جاں بحق ہونے والے افراد کے لواحقین سے ہمدردری کا اظہار کیا ہے ، وزیر اعلیٰ نے ضلعی انتظامیہ کو ہدائت کی ہے کہ جاں بحق ہونے والے افراد کی نعشیں سرکاری خرچ پر ان کی نعشیں ان کے گھروں میں پہنچائی جائیں اور زخمیوں کاعلاج معالجے کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں، وزیر اعلیٰ کے حکم پرڈی سی او حافظ آبادمحمد علی رندھاوا اور ڈی پی او حافظ آباد غیاث گل نے جائے حادثہ پر پہنچ کر اپنی نگرانی میں امدادی کام کی نگرانی کی اور بعد زاں ٹرام سنٹر میں زخمیوں کی عیادت کی، حادثہ کی اطلاع ملتے ہی ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافظ کرک ے تمام ڈاکٹروں اور عملے کو ہسپتا لوں میں بلا لیا گیا تھا،

مزید :

صفحہ اول -