3نومبر کی ایمرجنسی ،وکلاء کا عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ

3نومبر کی ایمرجنسی ،وکلاء کا عدالتی کارروائی کا بائیکاٹ

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر)سابق صدر جنرل (ر) پرویز مشرف کے3اکتوبر 2007کو ایمرجنسی کے نفاذ کے خلاف سپریم کورٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر رشید اے رضوی کی اپیل پر وکلاء نے عدالتی امور کا بائیکاٹ کیا اور سیاہ پٹیاں باندھ کر عدالتوں میں پیش ہوئے ۔تفصیلات کے مطابق سابق صدر پرویز مشرف کے تین اکتوبر 2007 کی ایمرجنسی کے خلاف سپریم کورٹ بار کے نو منتخب صدر رشید اے رضوی کی گزشتہ روز یوم سیاہ منانے کا اعلان کے بعد جمعرات کو سپریم کورٹ بار، ملیر بار اور کراچی بار کے وکلا کی جانب سے عدالتی امور کا بائیکاٹ کیاگیا۔ سٹی کورٹ میں وکلا احتجاجاًعدالتوں میں پیش نہیں ہوئے ۔ وکلا نے اپنے بازوں پر سیاہ پٹیاں باندھ کر 3 نومبر کی ایمرجنسی کی خلاف اظہار ناراضگی کیا ۔ جیل سے قیدیوں کو بھی عدالتوں میں پیش نہیں کیا گیا۔ وکلا کی ہڑتال کے باعث سائلین کو شدید پریشانی کا سامنا کرنا پڑا اس موقع پر وکلا رہنما ؤں نے کہا کہ 3 نومبر 2007 کا دن ملک اور عدالتوں کے لئے سیاہ ترین دن ہے۔ اس دن ایک آمر نے اپنی آمرانہ خواہش کے لئے عدالتوں کے تقدس کو پامال کیا ۔وکلا اس دن کو ہر سال یوم سیاہ کے طور پر منائیں گے تاکہ کوئی بھی آمر یا انصاف دشمن عناصر وکلا اور عدالتوں کی جانب میلی انکھ سے نہ دیکھ سکے ۔

مزید :

کراچی صفحہ اول -