مولانا فضل الرحمان کی فوج پر تنقید ،حکومت نے واضح پیغام دے دیا

مولانا فضل الرحمان کی فوج پر تنقید ،حکومت نے واضح پیغام دے دیا
مولانا فضل الرحمان کی فوج پر تنقید ،حکومت نے واضح پیغام دے دیا

  



اسلام آباد(ڈیلی پاکستان آن لائن)معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ فوج کو سیاست میں گھسیٹنے کی اجازت نہیں دینگے، جمہوری لوگ ہیں، مسائل کے حل کیلئے مل کر بات کرنے کو تیار ہیں، آپ ایک قدم بڑھائیں گے تو حکومت دو قدم بڑھائے گی،مذاکرات کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے،مولانا سے اپیل ہے کہ مارچ کو محفل میلادمیں تبدیل کر دیں،اس مبارک ماہ میں ہمیں انتشار سے بچنا چاہیے۔

اسلامآباد میں  نیوز کانفرنس  کرتے ہوئے ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہسیاست میں اختلاف رائے جمہوریت کا حسن ہے،سیاسی جماعت ہوتے ہوئے کبھی مذاکرات کے دروازے بند نہیں کیے،مولانا معاہدے پرعمل کرینگے تو حکومت ہر مسئلے پر بات چیت کیلئے تیار ہے،ہم جمہوری لوگ ہیں، مسائل کے حل کیلئے مل کر بات کرنے کو تیار ہیں،تصادم اور غنڈہ گردی سے ریاست کو یرغمال نہیں بننے دینگ، امید ہے مولانا فضل الرحمان تصادم سے بچ کر مفاہمت کا راستہ اختیار کرینگے،آپ ایک قدم بڑھائیں گے تو حکومت دو قدم بڑھائے گی۔انہوں نے کہا کہ پاکستان مشکل وقت سے نکل کر بہتری کی طرف گامزن ہے،بہتر ہوتی ہوئی معیشت کے راستے میں کوئی رکاوٹ نہیں آنے دینگے۔ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان کا کہنا تھا کہوزیراعظم عمران خان کے اشارے پر اس سے بڑا مجمع اکٹھا ہو سکتا ہے، وزیراعظم پر ذاتی حملے کیے گئے،دنیا کا کوئی بھی مذہب الزام تراشیوں کی اجازت نہیں دیتا،بہتر ہوتی ہوئی معیشت کے راستے میں کوئی رکاوٹ نہیں آنے دینگے، مولانا کے دھرنے سے سب سے زیادہ نقصان کشمیر کاز کو ہوا، مارچ کے شرکاء کا کوئی واضح ایجنڈ انہیں،تصادم اور غنڈہ گردی سے ریاست کو یرغمال نہیں بننے دینگے۔انہوں نے کہا کہ یہ فوج ہماری فوج ہے، آپ فوج کو سیاست زدہ کر رہے ہیں، فوج کو سیاست میں گھسیٹنے کی اجازت نہیں دینگے۔

مزید : قومی