ایم ٹی آئی ایکٹ‘ حکومتی کمیٹی اور ڈاکٹرز میں ڈیڈ لاک برقرار

      ایم ٹی آئی ایکٹ‘ حکومتی کمیٹی اور ڈاکٹرز میں ڈیڈ لاک برقرار

  



 ملتان (خبر نگار خصوصی)  میڈیکل ٹیچنگ انسٹی ٹیوشن(ایم ٹی آئی)آرڈیننس پر تشکیل کردہ حکومتی کمیٹی اور گرینڈ ہیلتھ الائنس(جی ایچ اے)کے مابین گذشتہ روز(اتوار)ہونے والے مذاکرات کامیاب نہیں ہوسکے ہیں اور فریقین میں ڈیڈ لاک برقرار ہے۔پروفیسر ڈاکٹر محمود ایاز،(بقیہ نمبر50صفحہ12پر)

پروفیسر ڈاکٹر خالد مسعود گوندل،پروفیسر ڈاکٹر عامر زمان پر مشتمل حکومتی کمیٹی نے گرینڈ ہیلتھ الائنس جسمیں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی،ینگ کنسلٹنٹ ایسوسی ایشن،ینگ نرسز ایسوسی ایشن اور پیرا میڈیکس کے نمائندے شامل تھے مذاکرات میں حصہ لیا۔جی ایچ اے نے حکومتی کمیٹی کے سامنے تین مطالبات پیش کئے۔جسمیں سرفہرست ایم ٹی آئی آرڈیننس کی واپسی،مذاکرات کے لئے اعلی اختیاراتی کمیٹی کی تشکیل،ڈاکٹروں کی برطرفی اور شوکاز نوٹس کی فوری واپسی شامل تھے۔جی ایچ اے کے مطابق حکومتی کمیٹی نے اصرار کیا کہ اگر ہڑتال ختم کردی جائے تو کمیٹی کو ڈاکٹروں کی برطرفی اور شوکاز نوٹس واپس لینے کا مکمل اختیار ہے۔مگر جی ایچ اے نے اس کمیٹی پر واضح کردیا ہے کہ وہ برطرفیوں اور شوکاز نوٹس سے ڈرنے والے نہیں ہیں انہوں نے ڈاکٹرز،نرسوں،پیرا میڈیکل سٹاف اور ہیلتھ کمیونٹی سے ایم ٹی آئی آرڈیننس کی واپسی کے لئے جو وعدہ کیا ہے اس سے ہرگز پیچھے نہیں ہٹیں گے۔جی ایچ اے مذاکرات کے لئے ہر وقت آمادہ ہے اب گیند حکومت کے کورٹ میں ہے کہ وہ اس مسئلے کو حل کرے#

برقرار

مزید : ملتان صفحہ آخر