12سال سے سندھ میں جوکرپشن ہوئی ذمہ دار مراد علی شاہ ہیں: حلیم عادل شیخ 

12سال سے سندھ میں جوکرپشن ہوئی ذمہ دار مراد علی شاہ ہیں: حلیم عادل شیخ 

  



کراچی(آن لائن)پاکستان تحریک انصاف سندھ کے سینیئر رہنما سندھ اسمبلی میں پارلیمانی لیڈر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ آج بھی سندھ میں پیپلزپارٹی کرپشن روکنے کو تیار نہیں ہے آج بھی انور مجید کے جیل سے احکامات جاری ہوتے ہیں 12 سالوں میں سندھ میں جو بھی کرپشن ہوئی ہے اس کے ذمہ دار مراد علی شاہ   ہیں۔ پہلے وزیر خزانہ کے طور پر پھر وزیر اعلیٰ ہوکر کرپشن کی ہے۔ مراد علی شاہ کا قلم کرپشن پر پانی کی طرح  چلتا ہے جب مراد علی شاہ کی کرپشن منظر عام پر لائی جاتی ہے وہ نچلی سطح پر گھٹیا حرکتوں پر اتر آتے ہیں، مجھ پر قاتلانہ حملہ بھی وزیر اعلیٰ کے کہنے پر کیا گیا۔  دیگر پی ٹی آئی رہنماؤں کے ہمراہ انصاف ہاؤس کراچی میں اہم پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ ٹرین حادثے میں میرپورخاص کے شہید ہونے اور زخمی ہونے والوں کے گھروں میں گیا تھا ڈی سی آفس میں بھی موجود تھا جب میتیں لائی گئیں تھی، سوشل میڈیا پر پیپلزپارٹی کی پیڈ سوشل میڈیا ٹیم جھوٹ  پھیلاتی ہے سوشل میڈیا پر ایک ٹرک دکھایا گیاجس میں لاشیں ڈالی جارہی ہیں وہ پنجاب کا نہیں تھا،لاشیں ساری ایمبولنس میں لائی گئیں تھی۔ کنری میں ہم جنازہ نمازہ میں شرکت کے لئیگئے  جہاں جھوٹے نواب تیمور ٹالپر نے اپنی اصلیت دکھائی تیمور ٹالپر کی اور ایس ایس پی عمرکوٹ اعجاز شیخ کی موجودگی میں مجھ پر پتھراؤ کیا گیا مقامی لوگوں نے ایک حملہ آور کو پکڑا کر وڈیو بھی بنائی تھی جو کہہ رہا تھا کہ مجھے نواب تیمور ٹالپر کے لوگوں نے پیسے دیئے تھے حملہ کرنے کے لئے۔ جس کو وڈیو بنانے کے لئے بعد علاقہ کے لوگوں نے چھوڑ دیا تھاجس کے اغوا کا جھوٹا مقدمہ مجھ پر اور ہمارے لوگوں پر درج کیا گیا ہے،ہم نے تھانے جاکر درخواست جمع کرائی تھی لیکن ہماری ایف آئی آر نہیں کاٹی گئی نواب تیمور ٹالپر نے سندھ کی روایت کی توھین کی ہے اپنے علاقے میں مجھ پر حملہ کروایا ہیتیمور ٹالپر کی کرپشن کی داستانیں مل ر ہی ہیں بیواؤں کی زمینوں پر قبضہ کیا ہے اس نے محکمہ اوقاف کی زمینوں سے سمیت سارے ثبوت مل رہے ہیں ہماری ایف آئی آر نہیں کاٹی گئی بلکہ الٹا ہم پر ایف آئی آر کاٹی گئی ہے ہم کورٹ جائیں گے عدالت سے رجوع کریں گے تیمور ٹالپر کو نہیں چھوڑیں گے ساری کرپشن دنیا کو دکھائیں گے، نواب تیمور اور ایس ایس پی عمرکوٹ اعجاز شیخ کی موجودگی میں سادہ لباس پولیس اہلکار موجود تھے جنہوں نے حملہ کیا تھا، آئی جی سندھ سے اپیل ہے کہ ہماری ایف آئی بھی کاٹی جائے ایف آئی آر کٹوانا ہمارا آئینی حق ہے دونوں ایف آئی کو کسی نیوٹل پولیس افسر کے حوالے کر کے تحقیقات کی جائے تیمور ٹالپر نے ارباب رحیم کی برادری اور مخدوم شاہ محمود قریشی کے لوگوں کی زمینوں پر قبضہ کیا ہے عمرکورٹ ان کی ریاست بننے نہیں دیں گے ان کا سیاسی قبرستان بنائیں گے۔

شیخ حلیم عادل

مزید : پشاورصفحہ آخر