غیر ملکی قرضے اتارنے کیلئے ایمر جنسی نافذ کی جائے‘خواجہ حبیب الرحمان

  غیر ملکی قرضے اتارنے کیلئے ایمر جنسی نافذ کی جائے‘خواجہ حبیب الرحمان

  



لاہور(این این آئی)ایران پاک فیڈریشن آف کلچراینڈ ٹریڈ کے صدر خواجہ حبیب الرحمان نے کہا ہے کہ معیشت کی ترقی کیلئے سرمایہ کاری اور کاروبار دوست ماحول سمیت سیاسی استحکام نا گزیر ہے،خو ف وہراس کی فضا کی وجہ سے ٹیکس نیٹ کو بڑھانے کیلئے اقدامات کے خاطر خواہ نتائج برآمدنہیں ہو رہے،غیر ملکی قرضے اتارنے کے لئے ایمر جنسی کانفاذ کیاجائے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں ملاقات کیلئے آنے والے صنعتکاروں اور تاجروں کے وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ خواجہ حبیب الرحمان نے کہا کہ حکومت کی جانب سے خوف و ہراس کی پالیسی کسی طور پر سود مند نہیں اور اس سے ٹیکس نیٹ بڑھنے کی بجائے مزید سکڑ جائے گااس لئے اس پالیسی پر نظر ثانی کرنے کی ضرورت ہے اور ہر شعبے کا اعتمادبحال کیا جائے۔ انہوں نے کہا کہ برآمدات میں اضافہ اردرآمدات میں کمی خوش آئند ہے، ہمیں گروتھ بڑھانے پر توجہ مرکوزکرنا ہوگی جس کے لئے ہر طرح کی انڈسٹری کو سہولیات اور مراعات فراہم کی جائیں۔ خواجہ حبیب الرحمان نے کہا کہ غیرملکی قرضوں سے چھٹکاراحاصل کئے بغیر مضبوط معیشت کے خواب کی تعبیر ممکن نہیں، قرضے اتارنے کیلئے ایمر جنسی کا نفاذ کیاجائے جس کے تحت مختلف محکموں کی واگزار کرائی جانے والی اوربے کار پڑی کھربوں روپے مالیت کی اراضی کولیز پر یا فروخت کر کے اس رقم کو قرض اتارنے کی مد میں اداکیا جائے۔

خصوصی فنڈ کا قیام عمل لایا جائے اور تمام وزارتیں اپنے اخراجات میں مزید کمی کر کے اس میں اپنا حصہ ڈالیں،کرپٹ لوگوں سے وصول کی جانے والی رقم کو بھی اس میں مختص کیا جائے۔

مزید : کامرس