سعودی کمپنی آرامکو کا سٹاک مارکیٹ میں حصص فروخت کرنے کا فیصلہ

    سعودی کمپنی آرامکو کا سٹاک مارکیٹ میں حصص فروخت کرنے کا فیصلہ

  



ریاض(مانیٹرنگ ڈیسک)سعودی عرب کی خام تیل نکالنے والی سب سے بڑی کمپنی آرامکو نے گزشتہ برس گوگل،ایگزون، موبل، ایپل کے کل منافعوں سے بھی زیادہ کمایا اور اب اس نے ریاض کی اسٹاک ایکسچینج کی فہرست میں شامل ہونے کا اعلان کردیا ہے۔سعودی معیشت کا انحصار تیل سے ہٹانے کے منصوبے کے تحت یہ دنیا کی سب سے بڑی ابتدائی عوامی پیشکش (آئی پی او) ہوگی۔سالوں تاخیر کے بعد آرامکو نے اسٹاک مارکیٹ میں خود کو متعارف کراتے ہوئے کہا ہے کہ 'دنیا کو تیل کا 10 فیصد فراہم کرنے والے توانائی کی سب سے بڑی کمپنی نے اپنی تاریخ میں نمایاں سنگ میل عبور کرلیا ہے۔تجزیہ کاروں کا کہنا ہے کہ آرامکو کی قیمت 17 کھرب ڈالر تک ہوسکتی ہے، آئی پی او دنیا کی سب سے بڑی کمپنی ہوسکتی ہے تاہم یہ دیکھنا یہ ہے کہ کمپنی اپنا کتنا حصہ فروخت کرنا چاہتی ہے۔غیر ملکی خبر رساں دارے کی رپورٹ کے مطابق آرامکو کے صدر یاسر الرومیان کا کہنا ہے کہ آج کمپنی کی تاریخ میں اہم سنگ میل عبور کرلیا گیا ہے اور سعودی نظریہ 2030 کے لیے اہم پیش رفت ہوئی ہے، ان کا کہنا تھا کہ اس کے قیام کے بعد سے سعودی آرامکو عالمی توانائی کی فراہمی کے لیے انتہائی اہم بن چکی ہے، امید کی جارہی ہے کہ ابتدائی طور پر کمپنی کے 5 فیصد حصص کو فروخت کیا جائے گا جس میں 2 فیصد تداول سعودی ایکسچینج اور 3 فیصد غیرملکی ایکسچینج میں کی جائے گی۔ کمپنی ترجمان کے مطابق پیشکش ادارہ جاتی سرمایہ کاروں کے ساتھ ساتھ سعودی شہریوں، ریاست اور دیگر خلیجی ممالک میں موجود غیر ملکی افراد کے لیے کھلی رہے گی۔دنیا کی سب سے زیادہ منافع کمانے والی کمپنی نے رواں سال 9 ماہ میں ہونے والے منافع کی رپورٹ بھی جاری کی جس میں کہا گیا کہ کمپنی کو 68 ارب ڈالر کا فائدہ ہوا ہے۔2018 میں آرامکو کا کل منافع 111.1 ارب ڈالر رہا تھا جو ایپل، گوگل اور ایگزون موبل کے ملا کر بھی منافع سے زیادہ تھا۔

آرامکو

مزید : علاقائی