کراچی میں آوارہ کتوں کی بھرمار، کاٹنے کے واقعات بڑھ گئے

کراچی میں آوارہ کتوں کی بھرمار، کاٹنے کے واقعات بڑھ گئے

  



کراچی(مانیٹرنگ ڈیسک) شہر قائد میں آوارہ کتوں کے کاٹنے کے واقعات بڑھ رہے ہیں، مگر سرکاری اداروں کی بے حسی ختم نہ ہو سکی۔ صورتحال پر قابو پانے کے بجائے بلدیہ عظمیٰ کراچی اور صوبائی حکومت ایک دوسرے کو ذمہ دار ٹھہرا رہے ہیں۔تفصیل کے مطابق شہر قائد میں آوارہ کتوں کی بہتات کی وجہ سے کاٹنے کے واقعات بڑھ رہے ہیں لیکن کئی قیمتی جانوں کے ضائع کے باوجود حکومتی بے حسی ختم نہیں ہو سکی ہے۔ کتے کے کاٹنے کے بڑھنے واقعات سے شہری خوف ذدہ نظر آتے ہیں۔ہزاروں شہری آوارہ پاگل کتوں کا شکار ہو رہے ہیں لیکن ہسپتالوں میں متاثرہ افراد کیلئے ویکیسین کی دستیابی مسئلہ بنی ہوئی ہے۔ میئر کراچی نے صورتحال کا ذمہ دار سندھ حکومت ٹھہراتے ہوئے کہا ہے کہ ویکیسسن کی فراہمی سمیت پاگل کتوں کے خاتمے کیلئے اقدامات نہیں اٹھائے گئے۔ادھر وزیر اطلاعات سندھ سعید غنی نے کہا ہے کہ ویکسیسین کی کمی پورے ملک کا مسئلہ ہے۔ کے ایم سی کے ہسپتالوں میں ویکیسن کی دستیابی یقینی بنانا متعلقہ حکام کی ذمہ داری ہے۔ سندھ حکومت سے درخواست کی گئی تو فراہم کی جا سکتی ہیں۔وزیر اطلاعات نے سندھ حکومت کے ماتحت ہسپتالوں میں ویکسین کی عدم موجودگی پر جہاں تعجب کا اظہار کیا، وہیں پاگل آوارہ کتوں کے تدارک سے متعلق سوال بھی گول کر گئے۔

آوارہ کتے

مزید : علاقائی