پی ٹی آئی کی حکومت جمہوری اقدار، روایات کی پاسداری پر یقین رکھتی ہے: وزیراعلٰی خیبر پختونخوا

    پی ٹی آئی کی حکومت جمہوری اقدار، روایات کی پاسداری پر یقین رکھتی ہے: ...

  



پشاور(این این آئی)وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت جمہوری اقدار اور روایات کی پاسداری پر یقین رکھتی ہے تاہم اْنہوں نے واضح کیاکہ جمہوریت کا راگ الاپنے والے آزادی مارچ کے قائدین ملک دشمن قوتوں کی آوازبننے کی بجائے تعمیری بات کریں اور قومی اداروں پر بلا جواز اور بے بنیاد تنقید سے گریز کریں۔ایک طویل جدوجہد اور بڑی قربانیوں کے بعد خطے میں امن کی بحالی ممکن ہو ئی ہے۔ پوری دْنیا کی نظریں پاکستان پر جمی ہیں، ہم مزید کسی تجربے یا آزمائش کے متحمل نہیں ہو سکتے۔ ان خیالات کا اظہار اْنہوں نے وزیراعلیٰ ہاؤس پشاور میں صوبائی وزیر اطلاعات شوکت یوسفزئی اور عوامی نمائندوں کے مختلف وفود سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ پاکستان تحریک انصاف کی نظام کی اصلاح کیلئے جدوجہد کا کسی بھی دوسری جماعت کے ساتھ موازنہ بنتا ہی نہیں۔ پی ٹی آئی موروثی سیاسی جماعت نہیں بلکہ ایک وڑن اور مشن کے تحت وجود میں آئی ہے جس کا مقصد پاکستان کو بدعنوان نظام اور مفاد پرستی پر مبنی سیاست سے نجات دلا کر ترقی کی راہ پر گامزن کرنا ہے۔ پی ٹی آئی حقیقی معنوں میں ایک عوامی اور جمہوری سیاسی جماعت ہے جس نے ہمیشہ جمہوری اقدار کو فروغ دیا ہے اس کے برعکس پی ٹی آئی کے مخالف نام نہاد سیاستدانوں نے جمہوریت کو ہمیشہ اپنی لوٹ مار پر پردہ ڈالنے اور عوام کو دھوکہ دینے کیلئے استعمال کیا ہے۔ اْنہوں نے کہاکہ موجودہ حکومت نے آزادی مارچ میں رکاوٹیں نہ ڈال کر عملی طور پر جمہوری ہونے کا مظاہرہ کیا ہے۔ محمود خان نے واضح کیا کہ موجودہ مارچ کیلئے پی ٹی آئی کے سابقہ دھرنے کو دلیل بنانا غیر منطقی اور سمجھ سے بالاتر ہے۔ پی ٹی آئی نے اپنے مطالبات اور تحفظات دلائل کی بنیاد پر حکومت وقت کے سامنے رکھے تھے اور حکومت کو اصلاح اور عمل درآمد کیلئے خاطر خواہ وقت دیا تھا اس کے باوجود اْس وقت کی حکومت نے تمام جمہوری اقدار کو روندتے ہوئے ریاستی دہشت گردی اور نہتے کارکنوں پر ظلم و ستم کا بازار گرم کیا تھا۔ آج جمہوری حق کی باتیں کرنے والے اپنا طرز عمل بھول چکے ہیں۔ وزیراعلیٰ نے کہاکہ اْن کی حکومت نے آزادانہ مارچ کی اجازت دی ہے تاہم مارچ میں شامل قائدین اور دیگر شرکاء کو چاہیئے کہ وہ آئینی حدود کی پاسداری کریں اور کسی بھی ایسی سرگرمی پر عوام کو نہ اْکسائیں جو ملک و قوم کی سلامتی اور امن عامہ میں رخنہ ڈالنے کا سبب بنے۔

محمودخان

مزید : علاقائی