نیب نے ایم کیو ایم رہنماء کامران اختر کیخلاف شکنجہ کس لیا

نیب نے ایم کیو ایم رہنماء کامران اختر کیخلاف شکنجہ کس لیا

  



کراچی(این این آئی)قومی احتساب بیورو نے متحدہ قومی موومنٹ کے سابق رکن سندھ اسمبلی کامران اختر کے خلاف شکنجہ کس لیا، متحدہ رہنما پر پلاٹوں کی غیر قانونی الاٹمنٹ کے الزامات ہیں۔ذرائع کے مطابق سابق رکن سندھ اسمبلی کامران اختر ایک مرتبہ پھر نیب کے ریڈار پر آگئے، اس حوالے سے نیب ذرائع نے بتایاکہ کامران اختر پر عہدے کے ناجائز استعمال کاالزام ہے۔اس کے علاوہ بطور ٹاؤن ناظم بلدیہ13قیمتی پلاٹ غیرقانونی طور پر الاٹ کرائے، مذکورہ پلاٹ کے ایم سی کی زیرملکیت زمین پر الاٹ کیے گئے جن کی مالیت60کروڑ روپے سے زائد ہے۔نیب ذرائع نے بتایاکہ کامران اختر کے دور میں یہ پلاٹ غیر قانونی طور پر پانچ سے20لاکھ روپے میں الاٹ کیے گئے، نیب کی تین رکنی ٹیم نے کارروائی کرتے ہوئے ان پلاٹوں الاٹیز کے بیانات ریکارڈ کرلئے ہیں، ان الاٹیز کے پاس پلاٹوں کی دستاویزات نہیں ہیں۔نیب ذرائع کے مطابق پلاٹ بلدیہ ٹاؤن یوسی 4 اور5میں 750سے22گز کے پلاٹ الاٹ کیے گئے۔ کامران اختر کے الاٹ کیے جانے والے پلاٹس پرشادی ہال بنائے گئے۔ذرائع کے مطابق ایک شادی ہال گزشتہ سال 5کروڑ روپے میں بیچا گیا، کامران اختر فاروق ستار گروپ کے ساتھ او آرسی پلیٹ فارم سے کام کررہے ہیں۔

کامران اختر

مزید : صفحہ آخر