فٹبال، ساتھی کو فضا میں اچھالنا جیسے کھیل تماشے اور صفائی، شرکاء آزادی مارچ کی سرگرمیاں 

     فٹبال، ساتھی کو فضا میں اچھالنا جیسے کھیل تماشے اور صفائی، شرکاء آزادی ...

  



 اسلام آباد(صباح نیوز) جمعیت علمائے اسلام (ف) کی جانب سے مولانا فضل الرحمن کی قیادت میں نکالے گئے آزادی مارچ کے بعد اسلام آباد میں حکومت کیخلاف دھرنا جاری ہے۔ دھرنے کے تیسرے دن جے یو آئی ایف کے کارکن علی الصبح نمازِ فجر کے بعد کھیل تماشوں میں بھی مصروف رہے۔کچھ جے یو آئی ف کے کارکن ٹیمیں بنا کر فٹ بال کھیلتے، چادر کی مدد سے اپنے ساتھی کو فضا میں اچھالتے نظر آئے تو دوسری جانب کارکنوں کی بڑی تعداد نے پنڈال کی صفائی بھی کی، وہاں پھیلی ہوئی گندگی اور کچرے کو سمیٹ کر ٹھکانے لگایا۔جلسہ گاہ میں ایک جگہ اسلام آباد پولیس کے اہلکار بھی جے یو آئی ف کے ایک کارکن کے پیچھے نمازِ فجر پڑھتے ہوئے نظر آئے۔اس حوالے سے جے یو آئی رہنماؤں نے کہا پولیس بھی ہماری صفوں موجود ہے، جہاں اسلام آباد کی پولیس اپنے فرائض منصبی انجام دینے میں دقت محسوس نہیں کر رہی وہیں وہ ہمارے کارکنان کیساتھ بلاخوف و خطر گھل مل بھی رہی ہے۔ کچھ شرکا جلسہ گاہ کے اطراف میں موجود سڑک پر فٹ بال کھیل کر لطف اندوز ہوئے، جبکہ ایک بڑی تعداد ان کا یہ میچ دیکھتی اور داد دیتی رہی۔دوسری جانب چند افراد نے ایک بڑی سی چادر کی مدد سے اپنے ساتھی کو فضا میں اچھالا، جبکہ ساتھ کھڑے افراد نے اس منظر کو خوب انجوائے کیا۔آزادی مارچ کے شرکاء میں شامل مختلف افراد مختلف اسٹالز سے انفرادی اور اجتماعی طور پر ناشتہ بھی کیا، ناشتے میں ہرنائی بلوچستان کی سوغات ٹکی بھی کھائی گئی جو 3 ماہ تک خراب نہیں ہوتی۔وفاقی دارالحکومت کی کشمیر ہائی وے فٹ بال اور کرکٹ کے میدان بن گئے کوڈی کا کھیل بھی جاری رہا، کارکنان اسلام آباد کے پارکوں میں جھولوں سے بھی محظوظ ہو رہے ہیں۔ ریفری نے سٹی بجائی انصار الاسلام کے رضا کاروں نے جسمانی مشقیں اور پریڈ کی کارکن کوڈی بھی کھیلتے رہے اور سامنے سے آنیوالے کو پکڑنے کیلئے اس پر لپکتے رہے۔ ایک بزرگ کارکن سے حیران کن بیٹنگ کی بہترین باونسرز فلڈرز بھی نظر آئے۔

کھیل تماشے

مزید : صفحہ اول