مولانا سینئر سیاستدان ہیں، معاہدہ نہیں توڑیں گے، قاسم سوری

مولانا سینئر سیاستدان ہیں، معاہدہ نہیں توڑیں گے، قاسم سوری

  



اسلام آباد(سٹاف رپورٹر)قومی اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکر قاسم خان سوری نے کہاہے کہ مولانا سینئر سیاستدان ہیں امید ہے انہوں نے جو معاہدہ کیا وہ نہیں توڑیں گے۔بحریہ انکلیو میں میراتھن ریس کی تقریب کے بعد میڈیا سے بات کرتے ہوئے پاکستان تحریک انصاف کے رہنما قاسم سوری نے کہا کہ مولانا فضل الرحمان کا بیٹا بھی اسمبلی میں ہے، ایشوز قومی اسمبلی میں لیکر آئیں اور مولانا الیکشن کے حوالے سے خدشات بتائیں،اسمبلی ہی بہترین فورم ہے۔قاسم سوری نے کہا کہ حکومت نے مذاکرات کے لیے کمیٹی بنائی اور انہیں سیکیورٹی بھی دی، فضل الرحمان بلا رکاوٹ آئے اور ہم نے معاہدہ کے تحت انہیں جگہ و سہولیات دیں، مولانا کو چاہیے وہ معاہدے کی پاسداری کریں اور وہیں بیٹھیں تو ہمیں کوئی اعتراض نہیں، اب بال مولانا کے کورٹ میں ہے۔دوسری جانب ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی قاسم سوری نے میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی مذاکراتی نے گزشتہ روز نیوز کانفرنس میں اپنا ایجنڈا بتا دیا تھا۔قاسم سوری نے کہا کہ مولانا کو معاہدے کے مطابق جگہ اور سہولت فراہم کی اور ان کے ساتھ آئے لوگوں کی تمام ضروریات پوری کی گئیں، اگر مولانا معاہدے کی پاسداری نہیں کریں گے تو حکومت کو اقدامات کرنا پڑیں گے۔انہوں نے مزید کہا کہ امید ہے مولانا معاہدہ نہیں توڑیں گے، احتجاج اپوزیشن کا آئینی حق ہے لیکن مولانا اپنی تقریر میں ذومعنی باتیں کر رہے ہیں جو کہ غلط ہے۔ڈپٹی اسپیکر قومی اسمبلی کا کہنا ہے کہ ریڈ زون میں سفارتکار رہتے ہیں، احتیاطی تدابیر کے لیے ریڈ زون کو سیل کیا گیا، اسلام آباد انتظامیہ نے سیکیورٹی کے پیش نظر انتظامات کیے ہیں، آزادی مارچ کو بھی پوری سیکیورٹی دی گئی ہے۔قاسم سوری نے کہا کہ مولانا کا اپنا بیٹا اسمبلی میں ہے، جو اپوزیشن کا نمائندہ ہے، مسئلہ سڑکوں پر حل نہیں ہو گا، مولانا اسمبلی میں اپنی شکایات پیش کریں۔خیال رہے کہ جمعیت علمائے اسلام (ف) کے سربراہ مولانا فضل الرحمان نے یکم نومبر کو وزیراعظم عمران خان کو مستعفی ہونے کے لیے 48 گھنٹے کا الٹی میٹم دیا تھا جب کہ حکومت کی جانب سے بنائی گئی کمیٹی کے رکن اسد عمر کا کہنا تھا کہ مولانا صاحب نے یہ ڈیڈ لائن اپنے دھرنے کے حوالے سے دی ہے۔

قاسم سوری

مزید : صفحہ اول