تھر میں عوام بھوکے مر رہے ہیں اور پیپلز پارٹی کس منہ سے احتجاج کر رہی ہے: مصطفی کمال 

تھر میں عوام بھوکے مر رہے ہیں اور پیپلز پارٹی کس منہ سے احتجاج کر رہی ہے: ...

  



کراچی (اسٹاف رپورٹر) پاک سرزمین پارٹی کے چیئرمین سید مصطفی کمال نے کہا ہے کہ پاکستان پیپلز پارٹی کی قیادت کس منہ سے آزادی مارچ کے کنٹینر پر کھڑے ہو کر وفاقی حکومت کی نااہلیوں کے خلاف احتجاج کرسکتی ہے جبکہ سندھ میں لگاتار تیسری بار حکومت کرنے کے باوجود کراچی سے کشمور تک پورا سندھ تباہ و برباد ہوچکا ہے۔ سندھ میں لوگ کتوں کے کاٹنے سے مر رہے ہیں، پینے کا صاف پانی میسر نہیں، تھر میں روز پانی اور خوراک کی قلت سے بچے مر رہے ہیں، ایڈز اور ڈینگی نے ہزاروں زندگیاں نگل لیں، اسپتال تباہ حال ہیں۔ لاکھوں بچے اسکولوں سے باہر ہیں اور جو اسکولوں میں جا بھی رہے ہیں ان کو معیاری تعلیم میسر نہیں ہے۔ پورے ملک کی سانسیں چلانے والے کراچی کی اپنی سانسیں گھٹ رہی ہیں، کراچی وینٹیلیٹر پر چلا گیا ہے، ہم ہی وہ ڈاکٹر ہیں جنہیں پاکستان کی تمام بیماریوں کے علاج کا علم ہے، یہ بات اب قوم کو سمجھ آرہی ہے کیونکہ قوم نے سب کو آزما لیا ہے جبکہ ہمارا ماضی ہمارے مضبوط کردار کی گواہی دے رہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گلزار کالونی میں کارکنان سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہا کہ سندھ کی بدقسمتی یہ ہے کہ وفاقی حکومت کی اس کی جانب کوئی توجہ نہیں جبکہ صوبائی حکومت عوام کو بے وقوف سمجھتی ہے کہ وہ کام کرے یا نہ کرے حکومت اسی کی رہے گی۔ ان حالات میں سندھ بھر کی عوام کو اپنی آنے والی نسلوں کی بقا کے لئے فیصلہ کرنا ہوگا اور حکمرانوں کو یہ واضح پیغام دینا ہوگا کہ اب انہیں مزید برداشت نہیں کیا جائے گا۔ ہمیں ہماری نسلیں کسی سیاسی وابستگی سے زیادہ پیاری ہیں۔ اب سندھ کے لوگ کارکردگی دیکھ کر اپنے نمائندوں کو منتخب کریں تاکہ سندھ کا تشخص پہلے کی طرح دنیا بھر میں بحال ہو۔

مزید : صفحہ اول