حلوہ مارچ کی ناکامی پاکستان کی کامیابی، مولانا مافیا سے نمک حلالی میں پیش پیش ہیں: فردوس

    حلوہ مارچ کی ناکامی پاکستان کی کامیابی، مولانا مافیا سے نمک حلالی میں پیش ...

  



اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک، نیوزایجنسیاں)وفاقی وزراء کی جانب سے آزادی مارچ  شدید تنقید کا سلسلہ جاری ہے،وفاقی وزراء نے اپوزیشن جماعتوں پر تنقید کرتے ہوئے کہا ہے کہّ حلوہ مارچ کی ناکامی پاکستان کی کامیابی ہے۔تفصیلات کے مطابق وفاقی وزیر سائنس اینڈ ٹیکنالوجی فواد چودھری نے کہاہے کہ مارچ وہ طبقہ کر رہا تھا جس نے قیام پاکستان کی مخالفت کی، ان کے بزرگ قائد اعظم کی اپوزیشن تھے، آج یہ عمران خان کی اپوزیشن بن گئے۔فواد چودھری نے مزید کہا کہ اس طبقے کی شکست پاکستان کے مستقبل کی کنجی ہے، ان شاء اللہ یہ معاملہ اب اختتام کی طرف بڑھ رہا ہے۔معاون خصوصی اطلاعات فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ مولانا مافیا سے نمک حلال کرنے میں پیش پیش ہیں، انہیں اپنی تیسری نسل کا سیاسی مستقبل تاریک نظر آرہا ہے،ان کا حکومت کیساتھ جھگڑا عوام کیلئے نہیں اپنے بچوں کیلئے ہے،یہ سب منتخب حکومت کیخلاف سازش کر رہے ہیں لیکن یہ ناکام ہوں گے۔فردوس عاشق اعوان نے  مولانا فضل الرحمان کے آزادی مارچ کے شرکاء سے خطاب کے بعد پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ جو خود کو عالم دین کہتا ہے اور الزام تراشی کرتا ہے۔ اسلام آباد میں چند دنوں سے تھیٹر چل رہا ہے۔ انہوں نے کہا کہ آزادی مارچ کے لئے ہر طرح کی سہولیات فراہم کیں۔ مذہب کا کارڈ استعمال کرکے اسلام آباد میں پڑاؤ کیا گیا۔ کچھ لوگ مذہب کا لبادہ اوڑھ کر اسلام آباد آئے۔ انہوں نے کہا کہ مولانا حضرت فضل الرحمن کو سٹیج دستیاب ہوا اور انہوں نے بہترین اداکاری کی۔ انہوں نے کہا کہ ہم نے احتجاج کرنے والوں کو اسلام آباد میں خوش آمدید کہا۔ آئین کی روشنی میں سیکیورٹی اور ہر سہولت دے کر مارچ کا استقبال کیا۔ انہوں نے کہا کہ آزادی مارچ کے شرکاء کا کوئی واضح ایجنڈا نہیں ہے۔ مولانا کی جانب سے مذہبی کارڈ کے ذریعہ عوام کو گمراہ کرنے کی مذمت کرتے ہیں۔ وفاقی وزیر مواصلات مراد سعید نے بھی توپوں کارخ دھرنیوالوں کی طرف کردیا اور کہا کہ ایک جانب مافیا ہے ایک جانب عمران خان، ایک کرپشن بچانے کی سر توڑ کوشش کر رہا ہے، ایک ملک و قوم کی ساکھ کی بحالی کی۔ عوام جانتی ہے کون ان کے لیے لڑ رہا ہے اور کون کرپشن بچانے کیلئے لڑرہاہے۔وفاقی وزیرفیصل واوڈا نے بھی تنقید کرتے ہوئے کہا کہ ایک طرف پِٹے ہوئے مسترد شدہ ڈاکو، چور، بے ایمان، لٹیرے اور دوسری طرف اکیلا ایماندار عمران خان، دو پارٹیاں تو بھاگ جائیں گی، ریاست کی رٹ چیلنج ہوئی تو حکومت بھی ڈی میں جا کے گول کرنے کیلئے تیارہے، ایسا گول ہوگا کہ ان کی رہی سہی سیاست بھی دفن ہو جائے گی۔ وفاقی وزیر حماد اظہر نے کہا کہ اپوزیشن کے چہروں سے پردہ ہٹانے پرفضل الرحمان کا شکر گزار ہوں، لبرل اور سیکولرازم کا نعرہ لگانے والی جماعتیں کھل کرسامنے آگئیں، پارلیمان کی بالا دستی کی باتیں کرنے والی جماعتوں کے چہروں سے پردہ اٹھ گیا۔وزیر مملکت برائے پارلیمانی امور علی محمد خان نے اپوزیشن کی جانب سے وزیر اعظم کے استعفے کے مطالبہ کو مسترد کرتے ہوئے واضح کیا ہے کہ انتخابات میں شکست کا غم آئندہ الیکشن میں ہی دور ہو سکے گا، خدانخوانستہ اگر مارچ کے دوران کوئی حادثہ یا نقصان ہوا تو معاہدہ کے مطابق اسکی ذمہ دار حکومت نہیں اپوزیشن ہوگی۔ وفاقی وزیر علی زیدی نے کہا ہے کہ پچھلے کچھ دنوں سے جتنی تکلیف کچھ تصاویر دے رہی ہیں وہ بیان سے باہر ہے، یہ وہ پسا ہوا طبقہ ہے جس کو مذہب کا پتا ہے  نہ ہی دنیا کا، بیچاروں کی روزی روٹی صرف مدرسوں کے مولویوں کی اطاعت سے جڑی ہوئی ہے، مذہب کے خود ساختہ ٹھیکیداروں نے ان کو ٹشو پیپر کی طرح استعمال کیا دنیا نے بھی انہیں قبول نہیں کیا۔

وفاقی وزراء 

مزید : صفحہ اول