”دھرنے میں ن لیگی رہنما نے مجھ سے پوچھا کہ مولانا کو اسلام آباد کون لایا ہے ؟، میں نے جواب دیا کہ ۔۔“آزادی مارچ میں حامد میر نے لیگی رہنما کو جواب دے کر حیران کر دیا

”دھرنے میں ن لیگی رہنما نے مجھ سے پوچھا کہ مولانا کو اسلام آباد کون لایا ہے ...
”دھرنے میں ن لیگی رہنما نے مجھ سے پوچھا کہ مولانا کو اسلام آباد کون لایا ہے ؟، میں نے جواب دیا کہ ۔۔“آزادی مارچ میں حامد میر نے لیگی رہنما کو جواب دے کر حیران کر دیا

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سینئر صحافی حامد میر نے تین روز قبل آزادی مارچ کے دھرنے کا دورہ کیا جہاں انہوں نے سٹیج پر خطاب کرتے ہوئے خواتین رپورٹرز کو کوریج کی اجاز ت دینے پر جے یو آئی ایف کا شکریہ ادا کیا

تاہم اس موقع پر ان کی ملاقات ن لیگی رہنماﺅں سے بھی ہوئی جس کا احوال انہوں نے اپنے آج کے جنگ نیوز میں لکھے گئے کالم میں کیاہے ۔

تفصیلات کے مطابق سینئر صحافی حامد میر کا اپنے کالم میں کہناتھا کہ نمازِ جمعہ کے بعد کنٹینر پر مسلم لیگ(ن) اور پیپلز پارٹی کے قائدین اپنے سامنے موجود ایک بہت بڑے مجمعے کو حیرانی سے دیکھ رہے تھے۔ مسلم لیگ(ن) کے ایک رہنما نے سرگوشی کے انداز میں پوچھا ”مولانا کو اسلام ا?باد کون لایا ہے؟“میں نے سرگوشی میں جواب دیا۔ عمران خان لایا ہے۔

حامد میر کا کہناتھا کہ پھر ا±س نے بے چینی کے ساتھ گھڑی کی طرف دیکھا اور پوچھا ”کیا شہباز شریف صاحب یہاں آئیں گے؟“ میں نے مسکرا کر کہا فکر نہ کرو شہباز شریف کو عمران خان یہاں ضرور بھیجے گا۔ا±س نے پوچھا ”وہ کیسے؟“ میں نے کہا وزیراعظم عمران خان نے گلگت میں ساری کی ساری اپوزیشن کے خلاف انتہائی سخت زبان استعمال کی ہے جو لوگ شہباز شریف اور بلاول بھٹو زرداری کو مولانا سے دور رہنے کا مشورہ دے رہے تھے وزیراعظم نے ا±ن کا کام مشکل کر دیا ہے آج یہاں شہباز بھی آئیں گے اور بلاول بھی رحیم یار خان کا جلسہ چھوڑ کر آئیں گے۔

تھوڑی دیر میں شہباز شریف پہنچ چکے تھے اور ان کے پیچھے پیچھے بلاول بھی آ گئے۔آزادی مارچ کے کنٹینر پر نو جماعتوں کی قیادت اکٹھی ہو چکی تھی اور ان سب کو یہاں اکٹھا کرنے کا کریڈٹ مولانا فضل الرحمٰن سے زیادہ عمران خان کو جا رہا تھا۔گلگت میں عمران خان نے جو لب و لہجہ اختیار کیا ا±س کا جواب مولانا فضل الرحمٰن نے ا±سی انداز میں دیا اور اڑتالیس گھنٹے کی ڈیڈ لائن دے کر کہا کہ استعفیٰ دو ورنہ عوام تمہیں وزیراعظم ہاﺅس سے گرفتار کر لیں گے۔

مزید : قومی