ہمیں بے وقوف مت بناﺅ،تم لوگ خودجاکر لکھواتے ہو،ساراسکرپٹ دیتے ہو،سندھ ہائیکورٹ سراج درانی کی درخواست ضمانت پر نیب کی کارکردگی پر برہم

ہمیں بے وقوف مت بناﺅ،تم لوگ خودجاکر لکھواتے ہو،ساراسکرپٹ دیتے ہو،سندھ ...
ہمیں بے وقوف مت بناﺅ،تم لوگ خودجاکر لکھواتے ہو،ساراسکرپٹ دیتے ہو،سندھ ہائیکورٹ سراج درانی کی درخواست ضمانت پر نیب کی کارکردگی پر برہم

  



کراچی(ڈیلی پاکستان آن لائن)سندھ ہائیکورٹ میں سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی اور دیگر کی درخواست ضمانت میں نیب نے سراج درانی کی جانب سے قیمتی گھڑیوں اور سونے کی خریداری کا ریکارڈپیش کردیا،عدالت نیب کی کارکردگی پر اظہار برہمی کرتے ہوئے کہا کہ آپ لوگ ابھی تک ہمارے سوالات کا واضح جواب نہیں دے سکے،جسٹس عمر سیال نے کہ ہمیں بے وقوف مت بناﺅ،تم لوگ خودجاکر لکھواتے ہو،ساراسکرپٹ دیتے ہو،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ یہ لکھوانا چھوڑ دو جن کو انگریزی کا لفظ نہیں آتا وہ انگریزی میں پورابیان لکھ کر دیتے ہیں،عدالت کو بے وقوف سمجھتے ہو؟جاچاہو لکھ کر دے دو ،جسٹس عمر سیال نے کہا کہ جس کو پکڑنا ہے پکڑتے ہو جس کو چھوڑنا ہو چھوڑ دیتے ہو۔

تفصیلات کے مطابق سندھ ہائیکورٹ میں سپیکر سندھ اسمبلی آغا سراج درانی اور دیگر کی درخواست ضمانت پر سماعت ہوئی،پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ ایف بی آر اور دیگر اداروں سے سراج درانی کی آمدنی اور اثاثوں کی چھان بین کی ،عدالت نے کہا کہ آپ لوگ ابھی تک ہمارے سوالات کا واضح جواب نہیں دے سکے ،جسٹس عمر سیال نے کہا کہ جوکچھ لکھ کر لائے ہیں وہ تفتیشی افسر کی سمجھ میں آرہاہوگا ،عدالت نے استفسار کیا کہ آپ نے ایک ارب روپے کا تخمینہ کیسے لگایا؟پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ سونا اور دیگر اشیا کی قیمت معلوم کرکے تخمینہ لگایا،آغا سراج درانی کے لاکرز سے قیمتی گھڑیاں بھی برآمد ہوئیں ،رولیکس کمپنی کی مدد سے گھڑیوں کی قیمت معلوم کی گئی ۔

جسٹس عمر سیال نے استفسارکیا کہ یہ گھڑیاں کہاں سے اور کب خریدی گئیں ؟،تفتیشی افسر نے کہا کہ جیولر کے بیانات بھی لئے انہوں نے قیمت کی تصدیق کی ،عدالت نے استفسار کیا کہ یہ تو موجودگی قیمت ہو گی آپ کیسے کہہ سکتے ہیں 1965 میں کیا قیمت ہوگی ؟۔نیب نے سراج درانی کی جانب سے قیمتی گھڑیوں اور سونے کی خریداری کا ریکارڈپیش کردیا،جسٹس عمر سیال نے کہ ہمیں بے وقوف مت بناﺅ،تم لوگ خودجاکر لکھواتے ہو،ساراسکرپٹ دیتے ہو،عدالت نے ریمارکس دیتے ہوئے کہا کہ یہ لکھوانا چھوڑ دو جن کو انگریزی کا لفظ نہیں آتا وہ انگریزی میں پورابیان لکھ کر دیتے ہیں،عدالت کو بے وقوف سمجھتے ہو؟جاچاہو لکھ کر دے دو ،جسٹس عمر سیال نے کہا کہ جس کو پکڑنا ہے پکڑتے ہو جس کو چھوڑنا ہو چھوڑ دیتے ہو۔

عدالت نے استفسار کیا کہ کیاجیولر اتنی ”انگریزی “لکھ سکتا ہے ؟پراسیکیوٹر نیب نے اعتراف کرتے ہوئے کہا کہ انگریزی ہماری اپنی ہوتی ہے ہم ترجمہ کرکے لکھتے ہیں ،ہم اس لئے لکھواتے ہیں زبردستی بیان نہیں کیاگیا،جسٹس عمر سیال نے کہا کہ تم لوگ بیان زبردستی لیتے ہو یہ بھی سچ ہے؟،پراسکیوٹر نیب نے کہا کہ جوگاڑیاں اور قیمتی اشیا سراج درانی کے گھرسے برآمدہوئیں وہ بے نامی جائیداد ہے ،عدالت نے کہا کہ یہ کیسے ثابت ہوگا یہ آغا سراج درانی لے کر بیٹھے ہوئے تھے ؟فرنٹ مینوں کو کیوں نہیں بلایاکہاں ہیں وہ؟پراسیکیوٹر نیب نے کہا کہ اکثر لوگ نہیں آئے ہم نے بلایا تھا،جسٹس عمر سیال نے کہا کہ آپ تو نیب ہیں جس کو چاہیں اسلام آبادجاکر پکڑلیتے ہوکیوں نہیں پکڑاسب کو،اگر نہیں آئے تو چھوڑا کیوں ؟وکیل آغا سراج درانی نے کہا کہ اثاثے تمام اہل خانہ سے متعلق ہیں یہ خاندانی زمینیں ہیں ،کسی نے 10 کروڑ کی زمین خریدی تو اس کا ریکارڈ چیک کیا گیا؟۔

مزید : قومی /علاقائی /سندھ /کراچی