”ضمانت عبوری ہے اور وہ باہر آکر ۔۔۔“مریم نوازشریف کی رہائی پر سینئر صحافی حامد میر نے اہم ترین باتیں بتا دیں

”ضمانت عبوری ہے اور وہ باہر آکر ۔۔۔“مریم نوازشریف کی رہائی پر سینئر صحافی ...
”ضمانت عبوری ہے اور وہ باہر آکر ۔۔۔“مریم نوازشریف کی رہائی پر سینئر صحافی حامد میر نے اہم ترین باتیں بتا دیں

  



اسلام آباد (ڈیلی پاکستان آن لائن )سینئر صحافی و تجزیہ کار حامد میر نے مریم نوازشریف کی ضمانت منظور ہونے پر تجزیہ پیش کرتے ہوئے کہا کہ فیصلہ آئین و قانون کے مطابق ہے ، مریم نواز کی ضمانت عبوری ہے ،کہ تیمار داری کیلئے دی گئی ہے ، عبوری ضمانت پر ملزم کیلئے سیاست میں حصہ لینا کافی مشکل ہو تاہے ، وہ عبوری ضمانت پر باہر آئیں گی تو اپنے والد کی تیمارداری ہی کریں گی ۔

سینئر صحافی حامد میر نے کہاہے کہ فیصلہ آئین و قانون کے مطابق ہے ، یہ فیصلہ ویسا ہی ہے جیسا کہ کچھ دن پہلے نواز شریف کی عبوری ضمانت ہوئی تھی اور اس میں بھی انسانی ہمدردی کا پہلو غالب تھا ، وہ بھی عبوری ضمانت ہے اور مریم نوازشریف کی بھی عبوری ضمانت ہے ۔

سینئر صحافی کا کہناتھا کہ عدالت کے فیصلے میں یہ واضح طور پر کہا گیاہے کہ تیمار داری کیلئے ضمانت پر رہا کر رہے ہیں ، نیب نے مریم نواز کی ضمانت کی مخالفت کی اور کہا کہ ضمانت کی کوئی ضرورت نہیں ہے ، اس میں یہ پہلو اہم ہے اگر نیب مخالفت کر رہی ہے تو اس سے یہ غلط ثابت ہو تاہے کہ کچھ حلقے تاثر پھیلا رہے تھے کہ یہ رہائی ڈیل کی صورت میں ہو گی ، ڈیل اسی صورت میں ہو سکتی تھی اگر نیب درخواست ضمانت کی مخالفت نہ کرتی ، نیب نے بھر پور طریقے سے مخالفت کی ۔یہ فیصلہ آئین و قانون کے مطابق ہے ۔

حامد میر کاکہناتھا کہ مریم نوازشریف کی عبوری ضمانت ہے جو کہ تیمار داری کیلئے دی گئی ہے ، عبوری ضمانت پر ملزم کیلئے سیاست میں حصہ لینا کافی مشکل ہو تاہے ، وہ عبوری ضمانت پر باہر آئیں گی تو اپنے والد کی تیمارداری ہی کریں گی ، یہ بھی کہا جاتارہا ہے کہ نوازشریف علاج کیلئے باہر چلے جائیں گے اور ساتھ مریم نواز بھی ، عبوری ضمانت پر باہر جانا مشکل ہو تاہے ، لہذا فی الحال مجھے نہیں لگتا کہ عبوری ضمانت کے بعد باہر کر آکر مریم نواز سیاسی سرگرمیوں میں حصہ لیں گی ، ان کافوکس تیمارداری ہی ہو گا ، یہ سہولت ضرور ملے گی کہ وہ پارٹی کے بہت سے رہنماﺅں سے ملاقات کر سکیں گے ، ان کو اپنے سیاسی خیالات سے آگاہ کر سکیں گی جبکہ وہ سیاسی ہدایات بھی دے سکتی ہیں ، یہ انسانی ہمدردی کی بنیاد پر ریلیف دیا گیاہے ۔

مزید : قومی