لاہورہائیکورٹ ملتان بنچ، قتل مقدمات مختلف اپیلوں پر سماعت،متعدد مجرموں  کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل

لاہورہائیکورٹ ملتان بنچ، قتل مقدمات مختلف اپیلوں پر سماعت،متعدد مجرموں  کی ...

  

ملتان(خصو صی  رپورٹر)چیف جسٹس لاہورہائی کورٹ کے حکم پر سزائے موت پانے والے مجرموں کی اپیلوں کی چوتھے رورز بھی جسٹس صراقت علی خان اور جسٹس شہرام سرور چو ہدری پر مشتمل سپیشل ڈویژن بنچ نے سماعت کی۔ حسب سابق گزشتہ روز بھی دس اپیلوں کی سماعت(بقیہ نمبر41صفحہ7پر)

 کی گئی۔ ان اپیلوں میں ایک ایسا کیس بھی سامنے آیآ۔جس میں سیشن جج مظفر گڑھ نے لڑکی کو اغوا کرنے پر عمر قید۔اسکے ساتھ  بداخلاقی کرنے پر 14 سال قید اور لڑکی کے بھائی کو قتل کرنے پر سزائے موت کی سزائیں سنائیں فاضل بنچ نے اسی سزائے موت عمر قید میں تبدیل کردی اور باقی سزائیں برقرار رکھیں اس اپیل کی پیروی مہر ارشاداحمد آگوانہ نے کی۔استغاثہ کے مطابق  ملزم محمد سلیم نے خالدہ پروین کو تھانہ سول لائینز  مظفرگڑھ کے علاقہ سے 15 جنوری 2014 کو اغوا کیا۔مزاحمت پر اس کے بھائی کو قتل کردیا اور خالدہ پروین  کو ایران لے گیا جہاں اس کے بطن سے ایک بیٹا عبدالصمد پیدا ہوا۔جو اب سات سال کا ہے۔پاکستان واپسی پر پکڑا گیا اور اسے سزا ہوئی۔لڑکی نے بیان دیا کہ سلیم نے اس کے ساتھ شادی نہیں کی بلکہ زنا کرتا رہا۔ تفصیلات کے  مطابق سات اپیلیں منظور کرتے ہوئے سزائے موت کے مجرموں کو بری کردیا۔تاہم تین اپیلوں میں چار مجرموں کی سزائے موت عمر قید میں تبدیل کردی گئی۔ان میں محمد سلیم۔محمد عارف محمد رفیق۔اور محمد بشیر شامل ہیں۔ایک مدعی اللہ ڈتہ کی ملزم کی سزا میں کمی کے خلاف نظر ثانی کی اپیل مسترد کردی فاضل سپیشل بنچ نے سات  اپیلوں میں  شک کا فائدہ دیتے ہوئیتمام ملزمان کو بری کردیا۔ تمام اپیلیں 2015   ،   2018،  اور2019 اور میں دائر کی گئیں  اسی طرح بری ہونے والوں میں ڈیرہ غازی خان اور ملتان ڈویژن کے اختر عباس،لطیف خان۔لیاقت علی۔آزاد خان۔عاشق حسین۔طارق محمود۔اور غلام جیلانی شامل ہیں مجرموں کی جانب سے سید اطہر شاہ بخاری۔شیخ محمد رحیم۔قاضی صدرالدین علوی۔ ایاز علی خانزادہ۔۔ملک شفیق کالرو۔اورنگ زیب گھمن۔ سید بدر رضا گیلانی۔ملک محمد سلیم۔محمد عثمان شریف کھوسہ۔ملک محمد لطیف کھوکھر۔پرنس ریحان افتخار شیخ۔ مشتاق حسین بڈانی نے اپیلوں کی پیروی کی۔  

مزید :

ملتان صفحہ آخر -