بلدیاتی انتخابات میں تاخیر پر سپریم کورٹ کا اظہار برہمی ، اٹارنی جنرل کو نوٹس

بلدیاتی انتخابات میں تاخیر پر سپریم کورٹ کا اظہار برہمی ، اٹارنی جنرل کو ...

  

   اسلام آباد(اے این این) بلدیاتی انتخابات کے انعقاد میں تاخیر پر سپریم کورٹ کا اظہار برہمی ¾ پنجاب، سندھ، خیبر پختونخوا اور اٹارنی جنرل کو نوٹس جاری کر دیے ¾ عدالت کاایڈووکیٹ جنرلز کو صوبائی حکومتوں سے ہدایت لے کر آگاہ کرنے کا حکم ¾ سماعت 14 اکتوبر تک ملتوی کردی گئی ۔ جمعہ کے روز سپریم کورٹ میں چیف جسٹس ناصر الملک کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے بلدیاتی انتخابات کیس کی سماعت کی۔ سماعت کے دوران ایڈوکیٹ جنرل سندھ نے بلدیاتی انتخابات میں تاخیر پر عدالت سے معذرت کرتے ہوئے کہا کہ حلقہ بندیوں سے متعلق مسودہ ایک ہفتہ میں جاری کر دیا جائے گا جس پر جسٹس عظمت نے کہا ہے کہ معافی آئین سے مانگیں جو معاف نہیں کرتا، تینوں صوبوں نے بلدیاتی انتخابات کے لئے کچھ نہیں کیا۔ جسٹس عظمت کا کہنا تھا کہ صوبے عمل کرنے کے بجائے عذر پیش کر رہے ہیں۔ عدالت حکم دیتی ہے مگر کسی کے کان پر جوں تک نہیں رینگتی، کیا سپریم کورٹ کو وفاقی اور صوبائی دفاتر لے جائیں۔ بلدیاتی انتخابات میں تاخیر کرنے پر چیف جسٹس ناصر الملک نے برہمی کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ کسی ایک صوبے نے بلدیاتی انتخابات کے لئے کچھ نہیں کیا پھر 15 نومبر سے پہلے بلدیاتی الیکشن کیسے ہوں گے آرڈیننس آئے گا پھر حلقہ بندیاں ہوں گی۔چیف جسٹس ناصر الملک نے ریمارکس دیئے کہ بلدیاتی انتخابات کے حوالے سے آئین کی شقوں پر عمل نہیں ہورہا ،عذر پیش کئے جارہے ہیں۔جسٹس عظمت سعید نے ریمارکس دیئے کہ ایڈووکیٹ جنرل نے معافی مانگی ہے،معافی ہم سے نہیں آئین سے مانگیں،آئین معاف نہیں کیاکرتا۔ایڈووکیٹ جنرل خیبرپختونخوا، ایڈیشنل ایڈووکیٹ جنرل پنجاب نے بلدیاتی انتخابات سے متعلق صوبائی حکومتوںسے نئی ہدایات لینے کی استدعا کی جسے منظور کرتے ہوئے عدالت نے بلدیاتی انتخابات سے متعلق کیس میں پنجاب، سندھ اور خیبر پختون خوا حکومت کے ایڈوکیٹ جنرلز کے ساتھ ساتھ اٹارنی جنرل کو نوٹسز جاری کرتے ہوئے حکم دیا کہ آئندہ سماعت پر صوبائی حکومتوں سے ہدایات لے کر عدالت کو آگاہ کیا جائے۔ کیس کی سماعت 14 اکتوبر تک ملتوی کر دی گئی ۔

 پر سپریم کورٹ کا اظہار برہمی

مزید :

صفحہ اول -