الیکشن کمیشن اپنے ہی تیار کردہ 5سالہ سٹریٹجک پلان پر عملدرآمد یقینی نہ بنا سکا

الیکشن کمیشن اپنے ہی تیار کردہ 5سالہ سٹریٹجک پلان پر عملدرآمد یقینی نہ بنا ...

  

                                         لاہور(شہباز اکمل جندران//محمد نواز سنگرا) الیکشن کمیشن کی پھرتیاں اپنے ہی تیار کردہ پانچ سالہ سٹریٹجک پلان پر عمل درآمد یقینی نہ بنا سکا۔ 2014تا 2018تک اصلاح و حکمت عملی کے دوسرے پانچ سالہ منصوبے میں منزل تک پہنچنے کے لیے 13درجے مقرر کیئے گئے۔لیکن 8درجوں میں ستمبر تک کے ہدف حاصل نہیں کئے جاسکے۔معلوم ہوا ہے کہ الیکشن کمیشن آف پاکستان نے دوسری مرتبہ حکمت اور اصلاح سے بھر پور پانچ سالہ منصوبہ پیش کررکھا ہے۔ 2014سے 2018تک کے اس منصوبے پر حقیقی معنوں میں عمل درآمد نہیں کیا جاسکا۔دوسرے پانچ سالہ پروگرام میں 13درجے مقرر کئے گئے ہیں۔ جن میںسے 8درجوں کے کم و بیش 15سے زائد اہداف کے لیے طے شدہ وقت گزر چکا ہے۔ لیکن ان پر عمل درآمد نہیں ہوسکا۔ پانچ سالہ منصوبے کے پہلے درجے میں طے پایا تھا کہ جون 2014تک 2013کے عام انتخابات کے ھوالے سے رپورٹ تیار کی جائیگی۔لیکن یہ مرحلہ ستمبر کے آخر میں مکمل ہوسکا ہے۔ اسی طرح دوسرے درجے میں طے کیا گیا تھا کہ جون کے مہینے تک ملک میں الیکٹرانک ووٹر مشینوں کے آپریشنل پلان کی تیاری مکمل کی جائیگی۔ لیکن یہ مرحلہ بھی ستمبرکے آخری دن ہی انجام پاسکا ہے۔جون کے مہینے میں ہی حلقہ بندیوں میں جی آئی ایس ٹیکنالوجی کے استعمال کا مرحلہ بھی عبور نہ ہوسکا۔ اسی طرح جون میں ہی پولنگ سٹیشنوں کی فہرستوں کی تیاری کے حوالے سے متعلقہ سرکاری اداروں سے ڈیٹا کے حصول اور اگست میں 2013کے عام انتخابات میں فرائض انجام دینے والے پولنگ سٹاف کے ڈیٹابیس کی تیاری بھی نہیں کی جاسکی۔ چھٹے درجے میں ستمبر تک کمپیوٹرائزڈ ووٹر لسٹیں تیار کرکے انہیں الیکشن کمیشن کے مرکزی سیکرٹریٹ ، صوبائی دفاتر اور نادرا کے دفاتر سے باہمی لنک کرنے کا مرحلہ ، جون میں انتخابی فہرستوں پر نظر ثانی کے ایس او پیز تیار کرنے کا مرحلہ عبور نہ ہوسکا۔ ساتویں درجے میں اگست تک سکول و کالج کی سطح پر ووٹر وں کو ایجوکیٹ کرنے کا مرحلہ عبوری نہیں ہوسکا۔ اسی طرح آٹھویں مرحلے میں جولائی کے مہینے تک ملک میں ہرجگہ خواتین کو ووٹ کاسٹ کرنے کا حق دینے کے حوالے سے ریسرچ کرنے کا مرحلہ، جنسی امتیاز کو ختم کرنے کے منصوبے پر عمل درآمد کا مرحلہ، ستمبر میں خواتین اور مرد ووٹروں کے مابین فرق ختم کرنے کی حکمت عملی اپنانے کا مرحلہ عبور نہیں ہوسکا۔ دسویں درجے میں ستمبر تک الیکشن کمیشن کے ملازمین کی صلاحیتوں کو بڑھانے کے منصوبے پر عمل درآمد اور تربیت کرنے والے افسروں کا ڈیٹا تیار کرنے کا مرحلہ عبور نہ ہوسکا۔ اور تیرھویں درجے میں الیکشن کمیشن کے ہر دفتر میں خواتین کے لیے الگ سے واش روم تعمیر کرنے کا مرحلہ بھی عبور نہیں ہوسکا۔

مزید :

صفحہ آخر -