’’سکھ کے سائے پھیل رہے ہیں‘‘

’’سکھ کے سائے پھیل رہے ہیں‘‘
’’سکھ کے سائے پھیل رہے ہیں‘‘

  

اچھائی اور نیکی‘ معاشرے میں دکھ اور درد کی پرچھائیوں کو دور کرتے ہوئے‘ یوں پھیل جاتی ہیں کہ کوئی بھی فرد انہیں محسوس کئے بغیرنہیں رہ سکتا۔ قحط الرجال کے ہر دور میں کچھ لوگ ایسے بھی ہوا کرتے ہیں‘ جن کی موجودگی معاشرے کے تمام اندھیروں کوشکست دینے کا سبب بنتی ہے۔ کچھ ایسے ہی کمال آدمی تھے جنہوں نے آج سے پانچ سال قبل نہ صرف پنجاب بلکہ وطن عزیز کے ہر اس بچے کے بارے میں سوچا جو محروم معیشت ہونے کے باعث قلم اورکتاب کا خواب دیکھاکرتا۔ جو بستے اٹھائے دمکتے چہروں والے گلنار گالوں والے ہنستے مسکراتے کھیلتے کھلکھلاتے بچوں کو دیکھ کر حسرت سے یوں آسمان کی طرف دیکھتا ۔ اس کی خاموش آہ یقیناًفرش سے عرش تک آناًفاناً پہنچتی ہو گی۔اللہ تعالیٰ اپنے کچھ بندوں کو مخلوق کی خدمت کی سعادت عطا کرتے ہیں اور یہی وہ لوگ وہ روشنی کے مینارہیں جو تاریکیوں کو منور کرتے ہیں۔

پانچ سال قبل محمدشہبازشریف نے پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کا آغاز 2ارب روپے کی خطیر رقم سے کیا۔ اللہ تعالیٰ کے فضل و کرم سے صرف سات سال کی قلیل مدت میں پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ 14ارب روپے کے اعداد و شمار ظاہر کرتا ہے۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کے قیام کا مقصد غربت کے باعث تعلیم جاری رکھنے سے قاصر ہر باصلاحیت بچے کو اعلیٰ تعلیم کے ممکنہ مواقع فراہم کرنا تھا تا کہ یہ باصلاحیت نوجوان معیاری اور اعلیٰ تعلیم حاصل کرکے ملکی ترقی اور استحکام میں بھرپور کردارادا کریں۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کا بنیادی خیال بھی یہی تھا کہ کوئی باصلاحیت نوجوان والدین کی معاشی محرومی کے باعث تعلیم سے محروم نہ رہے۔ طلبا کی زندگی میں آنے والے اس انقلاب سے کئی خاندان اور ان کئی خاندانوں سے معاشرے میں قابل ذکر تبدیلی آ رہی ہے۔ یہی وہ تبدیلی ہے‘ جس کی قوم کو ضرورت ہے۔ یہ طلبا علم کی روشنی بانٹتے ہوئے جب میدان عمل میں اتریں گے‘ تو وطن عزیز کا کونہ کونہ منور ہو گا۔

پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کی خاص بات یہ ہے کہ روایات کے برعکس اس سے نہ صرف پنجاب بھر کے طلبا مستفید ہو رہے ہیں بلکہ سندھ‘ بلوچستان‘ خیبرپختونخوا‘ گلگت بلتستان‘ فاٹا اور آزاد کشمیر کے ہزاروں طلبا بھی یکساں مواقع کے ساتھ فائدہ اٹھا رہے ہیں۔ علاقائیت سے بالاتر ہو کر مخصوص کوٹے کے تحت ہر سال دیگر صوبوں کے طلبا کی معاونت کا بھی اہتمام کیا جاتا ہے۔ یہی وجہ ہے کہ بلوچستان حکومت نے اسی طرز پر بلوچستان ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ تشکیل دیا اور حکومت پاکستان نے وزیراعظم محمد نوازشریف کے ویژن کے تحت نیشنل انڈوومنٹ فنڈ کااہتمام کیا۔ یہ ایسا سکالرشپ ہے جس کے لئے کسی باصلاحیت طالب علم کو روایتی طور پر سرکاری اداروں کو درخواست نہیں دینا پڑتا بلکہ پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ اپنے وسائل اور ذرائع سے ہونہار طلبا و طالبات سے رابطہ کرتی ہے۔

پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کی کامیابی میں وائس چیئرمین ڈاکٹر امجد ثاقب جیسے بے لوث درویش اور جسٹس (ر)عامر رضا جیسی اعلیٰ شخصیات کی سرپرستی کا بہت عمل دخل ہے۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کی خدمات کا اعتراف معروف عالمی جرائد بھی کر چکے ہیں۔ برطانوی ادارہ برائے بین الاقوامی ترقی ‘ پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کے اشتراک سے پنجاب کے دورافتادہ دیہات میں مستحق طالبات کی تعلیم و تربیت کے لئے بھرپور معاونت فراہم کر رہا ہے۔ پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کے زیراہتمام ایک لاکھ طلباء کو سکالرشپ کی فراہمی کا ہدف مکمل ہونے پر ایوان اقبال لاہور میں خصوصی تقریب منعقد ہوئی۔ تقریب کی صدارت وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہبازشریف نے کی۔ تقریب میں وزیرمملکت بلیغ الرحمن‘ چیئرمین ہائیر ایجوکیشن پنجاب ڈاکٹر نظام الدین‘ صوبائی وزراء‘ ارکان ارکان اسمبلی‘ کالم نگار‘ دانشوروں‘ ماہرین تعلیم‘ پیف سکالرز‘ ان کے والدین‘ اساتذہ اور دیگر مکاتب فکر کے افراد نے بہت بڑی تعداد میں شرکت کی۔ تقریب میں وزیراعلیٰ کا جوش و جذبہ اور مسرت دیدنی تھی۔ وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے پنجاب ایجوکیشنل انڈوومنٹ فنڈ کی سالانہ رقم 2ارب سے بڑھا کر 4 ارب کرنے کا اعلان بھی کیا۔

وزیراعلیٰ محمد شہبازشریف نے اس موقع پر انتہائی پراثر خطاب کیا۔ وزیراعلیٰ نے کہا کہ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈنے مشکل ترین حالات میں ہتھیار نہ ڈالنے والے قوم کے قابل بیٹے اور بیٹیوں کیلئے اعلی تعلیم کے دروازے کھولے ہیں اور آج کی پر وقار تقریب اشرافیہ کے بچوں کی توقیر کیلئے نہیں بلکہ محنت کی عظمت کو سلام کرنے کیلئے منعقد کی گئی ہے ۔تقریب میں ایسے پیف سکالرز موجود ہیں جنہوں نے غریب گھرانوں میں آنکھ کھولی اور پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے ذریعے اعلی تعلیم حاصل کی۔تقریب میں موجود پیف سکالرز ،تمنداروں، زمینداروں ،سرمایہ داروں ،سیاستدانوں، ججوں،جرنیلوں اوراعلی حکام کی بجائے ان کروڑوں پاکستانی بچوں کی نمائندگی کررہے ہیں جن کے والدین نے مشکل حالات میں بھی اپنے بچوں کو زیور تعلیم سے آراستہ کیااور و ہ ایسے عظیم پاکستانی ہیں،جن کا شعارمحنت ،امانت اور دیانت ہے۔

یہ عظیم لوگ قیام پاکستان سے اپنے حق سے محروم رہے اوران کا یہ حق اشرافیہ نے چھین رکھا تھا لیکن پنجاب حکومت نے پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈکے ذریعے یہ حق انہیں دیا ہے اور بلاشبہ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈقائدؒ اوراقبالؒ کے خواب کی حقیقی تعبیر ہے۔ پاکستان میں پیف سکالرزناصر محمود،صباء صفدراورعرفان سیموئل جیسے کروڑوں بچے موجود ہیں جو تعلیم کی تڑپ تو رکھتے ہیں لیکن ان کی غربت حصول تعلیم میں حائل ہے اوران پر معیاری تعلیم کے دروازے بند ہیں۔یہ اس لئے نہیں کہ وہ ذہین اور محنتی نہیں ہے بلکہ یہ صرف اس لئے ہے کہ ان کے پاس تعلیم کیلئے وسائل موجود نہیں۔پنجاب حکومت نے ایسے ہی ہیروں کو تراشنے کیلئے دنیا کی تاریخ کا سب سے بڑا ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈقائم کیا ہے جس میں غریب خاندانوں کے ذہین و قابل بچے اوربچیوں کیلئے ملکی و غیر ملکی اعلی تعلیمی اداروں میں حصول تعلیم کے مواقع پیدا کیے ہیں ۔وزیراعلیٰ نے پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے حوالے سے وائس چےئرمین پیف ڈاکٹرامجد ثاقب،سیکرٹری تعلیم،جسٹس (ر) عامر رضا اور پیف کے بورڈ آف ڈائریکٹرز کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ ہم انشاء اللہ ملکر ملک و قوم کی تقدیر بدلیں گے اوروطن عزیزسے جہالت کے اندھیرے دور کریں گے اور پاکستان کو اپنے پاؤں پر کھڑا کریں گے۔

وائس چےئرمین پیف ڈاکٹر امجد ثاقب نے ایک لاکھ طلبا کی سکالرشپ کا ہدف پورا ہونے کی یادگاری تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ تاریک راتوں میں دیا جلانے کا جو عہد اورعزم وزیراعلیٰ شہبازشریف نے کیا تھا وہ پورا ہوچکا ہے اور پیف پاکستان کا سب سے بڑا فنڈ بن چکا ہے اور اس فنڈ کے تحت غریب گھرانوں کے ذہین بچے لمز،نسٹ،فاسٹ،جی سی اوردیگر ملکی و غیر ملکی باوقار تعلیمی اداروں میں اپنی تعلیمی پیاس بجھا رہے ہیں ۔شہبازشریف نے تعلیمی فنڈ قائم کر کے جو تاریخی کارنامہ سرانجام دیا ہے اس کے تحت اب اپنے بچے کو تعلیم دلانے کیلئے کسی ماں کا آنچل آنسوؤں سے نم نہیں ہوگااورنہ ہی کسی کی امید دم توڑے گی۔پنجاب کے وزیراعلیٰ درد مندشخصیت ہیں اوروہ علم دوست وزیراعلیٰ ہیں،انہوں نے تعلیمی فنڈ کے ذریعے ہیرے تراش کرنئی تاریخ رقم کی ہے ۔وائس چانسلر پنجاب یورنیورسٹی ڈاکٹر مجاہد کامران نے کہا کہ پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈغالباً دنیا کا سب سے بڑا فنڈ بن چکا ہے ۔یوکے ایڈ کی مسز جوڈتھ ہربرٹسن(Ms.Judith Herbertson) نے تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ پنجاب حکومت کی فروغ تعلیم کیلئے کاوشیں لائق تحسین ہیں اورشہبازشریف کی متحرک قیادت کی بدولت پنجاب میں تعلیمی شعبہ میں نمایاں بہتری آئی ہے۔پیف سکالرز نے پنجاب کے وزیراعلیٰ محمد شہباز شریف کو پنجاب ایجوکیشنل انڈومنٹ فنڈ کے قیام پر زبردست الفاظ میں خراج تحسین پیش کیا اور تعلیم کیلئے وسائل کی فراہمی پر وزیراعلیٰ کا شکریہ ادا کیا

مزید :

کالم -