شام، ڈرون حملے میں حزب اللہ کے 8جنگجو ہلاک، 20زخمی

شام، ڈرون حملے میں حزب اللہ کے 8جنگجو ہلاک، 20زخمی

دمشق (این این آئی)شام کے وسطی صوبے حمص میں ایک ڈرون حملے میں شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے آٹھ جنگجو ہلاک اور بیس سے زیادہ زخمی ہوگئے ۔غیرملکی خبررساں ادارے کے مطابق برطانیہ میں قائم شامی رصدگاہ برائے انسانی حقوق کے سربراہ رامی عبدالرحمان نے بتایا کہ حمص میں واقع قصبے سخنہ کے نزدیک ایک نامعلوم بغیر پائیلٹ طیارے نے حزب اللہ کے ایک ٹھکانے کو نشانہ بنایا ،انھوں نے حملے میں آٹھ جنگجوؤں کی ہلاکت اور بیس کے زخمی ہونے کی تصدیق کی ہے۔برسرزمین موجود ایک ذریعے نے بھی اس حملے کی تصدیق کی ہے لیکن ہلاکتوں کی تعداد سات بتائی ہے۔اس ذریعے کا کہنا تھا کہ ابھی تک یہ معلوم نہیں ہوسکا ہے کہ یہ حملہ کس نے کیا ہے؟لبنان کی شیعہ ملیشیا حزب اللہ کے جنگجو شام میں صدر بشارالاسد کی فوج کے شانہ بشانہ باغی جنگجو گروپوں اور داعش کے خلاف لڑرہے ہیں اور ان کی بدولت شامی فوج نے گذشتہ مہینوں کے دوران میں باغیوں کے خلاف جنگ میں نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں۔اس وقت اسدی فورسز اور اس کے اتحادی جنگجو شام کے صحرائی علاقے بادیہ میں داعش کے خلاف نبرد آزما ہیں۔انھیں بشار الاسد کے اتحادی روس کی فضائی مدد حاصل ہے۔انھوں نے جہادیوں کے زیر قبضہ بہت سے علاقے واپس لے لیے ہیں۔تاہم باغی جنگجو جوابی حملے کرتے رہتے ہیں۔داعش کے جنگجوؤں نے اتوار کے روز صوبہ حمص ہی میں واقع ایک قصبے القریتین پر دوبارہ قبضہ کر لیا تھا۔اس قصبے پر شامی فوج نے اپریل 2016ء میں دوبارہ کنٹرول حاصل کیا تھا۔اس سے پہلے آٹھ ماہ تک داعش کا اس پر قبضہ برقرار رہا تھا۔یاد رہے کہ شام میں مارچ2011ء سے جاری لڑائی اور خانہ جنگی میں تین لاکھ تیس ہزار سے زیادہ افراد مارے جاچکے ہیں اور لاکھوں شامی بے گھر ہوچکے ہیں۔ان میں زیادہ تر پڑوسی ممالک میں عارضی طور پر مقیم ہیں۔

مزید : عالمی منظر