جب لاہور کے قلعہ پر غیر ملکی جھنڈا”یونین جیک“ لہرا یا گیا

جب لاہور کے قلعہ پر غیر ملکی جھنڈا”یونین جیک“ لہرا یا گیا
جب لاہور کے قلعہ پر غیر ملکی جھنڈا”یونین جیک“ لہرا یا گیا

  

 مصنف: پروفیسر عزیز الدین احمد

قسط:63 

سید رجب علی میر منشی ریذیڈنٹ نے مہاراجہ دلیپ سنگھ کی معزولی کا حکمنامہ اونچی آواز میں سنجیدگی سے پڑھ کر سنایا جس میں کہا گیا تھا کہ برطانوی حکومت نے پنجاب سرکار سے کیے گئے تمام معاہدوں پر عملدرآمد کیا لیکن پنجاب سرکار نے باغیانہ رویہ اختیار کیا اور برطانوی علاقوں پر فوج کشی کی اور شکست سے دوچار ہوئی۔ لیکن اس کے باوجود انگریز حکومت نے ازراہ مہربانی پنجاب حکومت کو صلح و آشتی کی راہ اختیار کرنے کا ایک اور موقعہ فراہم کیا۔ پنجاب سرکار نے اس سے فائدہ حاصل کرنے کی بجائے معاہدہ شکنی کرتے ہوئے لڑائی شروع کر دی اور برطانوی حکومت کو خراج کی ادائیگی بھی روک دی اور نہ ہی سابقہ قرضے لوٹائے۔ پنجاب کی فوج نے ریجنسی کونسل کے ایک رکن کی کمان میں انگریزوں کے خلاف جنگ شروع کر دی جس کا مقصد انگریز حکومت کا خاتمہ کرنا تھا۔ لہٰذا انگریز حکومت نے پنجاب سرکار کو شکست دینے کے بعد فیصلہ کیا ہے کہ:

(الف)مہاراجہ دلیپ سنگھ کو تخت سے معزول کیا جاتا ہے، پنجاب کی آزادی اور خود مختاری ختم کی جاتی ہے اور اسے برطانوی سلطنت کا حصہ بنایا جاتا ہے۔

(ب) وہ پنجابی سردار اور امراءجنہوں نے انگریزوں کی مدد کی ان کی املاک اور خطابات باقی رہنے دیئے جائیں گے اور جنہوں نے برطانوی حکومت کے خلاف ہتھیار اٹھائے ان کی املاک اور جاگیریں بحق سرکاری ضبط کرلی جائیں گی۔

(ج) گورنر جنرل کی طرف سے حکم جاری کیا جاتا ہے کہ پنجاب کے عوام برطانوی حکومت کے احکامات پر عملدرآمد کریں۔ یہ حکم سرداروں اور عوام پر یکساں لاگو ہوگا۔ پرامن شہریوں کے ساتھ رحمدلی اور نرمی کا برتاﺅ کیا جائے گا اور جو کوئی نئی حکومت کے خلاف ہنگامہ آرائی کا مرتکب ہوگا، ہتھیار اٹھائے گا اور قتل و غارت گری کا ارتکاب کرے گا اسے تنبیہہ کی جاتی ہے کہ اسے سختی سے کچل دیا جائے گا۔

 یہ حکم نامہ جب 3 زبانوں یعنی انگریزی، فارسی اور ہندوستانی میں پڑھ کر سنایا گیا تو دربار پر سناٹا چھا گیا۔ تاریخ کے اس اہم اور دکھ بھرے لمحے میں تیج سنگھ نے کاغذات مہاراجہ کے آگے رکھ دیئے اور نوعمر دلیپ سنگھ نے ان پر اپنے دستخط ثبت کر دیئے۔ اور اسی کے ساتھ کارروائی اپنے انجام کو پہنچی۔ انگریز افسر دربار سے روانہ ہوئے اور عین اسی وقت لاہور کے قلعہ پر غیر ملکی جھنڈا”یونین جیک“ لہرا دیا گیا۔ توپوں کی سلامی کی آواز سن کر لوگوں نے ایک دوسرے کو دکھ بھرے لہجے میں کہا یہ لاہور کی حکومت کے خاتمے کا اعلان ہے۔ ( جاری ہے ) 

نوٹ : یہ کتاب ” بُک ہوم“ نے شائع کی ہے ۔ ادارے کا مصنف کی آراءسے متفق ہونا ضروری نہیں ۔(جملہ حقوق محفوظ ہیں )۔

مزید :

ادب وثقافت -