سردار تنویر الیاس سے امریکی سفیر کی ملاقات، دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال

سردار تنویر الیاس سے امریکی سفیر کی ملاقات، دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال
سردار تنویر الیاس سے امریکی سفیر کی ملاقات، دلچسپی کے امور پر تبادلہ خیال

  

راولاکوٹ(ڈیلی پاکستان آن لائن)وزیر اعظم آزادکشمیر سردار تنویر الیاس خان کی دعوت پر امریکی سفیر ڈونلڈ بلوم کی ان کی رہائش گاہ سردار پیلس بنگوئیں آمد، وزیر اعظم کے ساتھ ون آن ون ملاقات، مسئلہ کشمیر، سیاحت، ہائیڈل، روزگار سمیت دیگر امور پر تفصیلی تبادلہ خیال کیا گیا۔اس موقع پر حکومت آزادکشمیر کی جانب سے امریکی سفیر کوآزاد کشمیر میں سپیشل اکنامک زون، ڈرائی پورٹ کے قیام، سیاحت اور ہائیڈل کے شعبہ میں سرمایہ کاری کے حوالہ سے پرپوزل پیش کیا گیا۔پروپوزل میں بتا یا گیا کہ آزاد کشمیر میں ہیومن ریسورس کا بڑا سکوپ موجود ہے جس سے فائدہ اٹھاتے ہوئے آوٹ سورس سروسز، کنسلٹنسی اور آ ئی ٹی کی سروسز  مہیا کی جاسکتی ہیں۔حکومت آزاد کشمیر کی طرف سے امریکی سفیر کو دئیے جانے والے پروپوزل میں ایس ایم ایز اور آرٹس اینڈ کرافٹس کے بزنس کے مواقعوں پر بھی بات چیت کی گئی اور انہیں بتایا گیا اس وقت دنیا میں اس شعبہ کے اندر 600ارب ڈالر کا بزنس کیا جارہا ہے۔ آزادکشمیر میں اس شعبہ کے اندر زبردست سکوپ موجود ہے جس پر کام کیا جائے تو یہ ریاست کے جی ڈی پی کے لیے انتہائی موثر ہو سکتا ہے۔

پروپوزل میں امریکی سفیر سے مزید کہا گیا کہ آزاد کشمیر میں  شرح خواندگی قومی سطح پر سب سے زیادہ ہے اس لیے آزادکشمیر کے تعلیمی اداروں کے طلبہ کے لیے امریکہ کی یونیورسٹیز کے ساتھ اکیڈمک ایکسچینج پروگرام شروع کیا جائے جس کے تحت یونیورسٹی کے طلباء دو سال یہاں کے تعلیمی اداروں میں پڑھنے کے بعد ایک سال کے لیے امریکہ کی یونیورسٹی میں جائیں اور آخری سال یا سمسٹر واپس یہاں کے تعلیمی اداروں میں آکر مکمل کریں تاکہ انہیں تجربہ بھی حاصل ہو اور روزگار بھی مل سکے۔

اس موقع پر وزیراعظم آزادکشمیر نے امریکی سفیر کی توجہ مقبوضہ کشمیر میں جاری بھارتی مظالم کی روک تھام اور کشمیریوں کے حق خودارایت کیطرف بھی مبذول کراتے ہوئے امریکہ کے کردار پر زور دیا۔اس موقع پر حکومت آزادکشمیر کی طرف سے 2005کے زلزلہ میں امریکہ کی طرف سے دی جانے والی امداد اور بحالی نو کے حوالہ سے ان کا شکریہ ادا کیا اور کہا کہ تعلق کا یہ سلسلہ برقرار رہنا چاہیے حکومت آزادکشمیر نے یو ایس ایڈ پروگرام میں اضافے اور حالیہ سیلاب متاثرین کی امداد کی بھی اپیل کی۔ حکومت کی طرف سے امریکی سفیر کو آزادکشمیر میں موجود آثار قدیمہ کو محفوظ بنانے اور موسمیاتی تغیرات سے ہونے والے نقصان میں بھی معاونت کی اپیل کی گئی۔ سفیر کے ہمراہ پولٹیکل اور اکنامک افیئرز کے افسران بھی موجود تھے جبکہ وزیر اعظم کے ہمراہ پارلیمانی سیکرٹری تقدیس گیلانی،سردار یاسر الیاس خان اور پرنسپل سیکرٹری احسان خالد کیانی  موجود تھے۔

مزید :

علاقائی -آزاد کشمیر -مظفرآباد -