لیسکو چیف کی میرٹ کیخلاف تعیناتی پر سینئر افسران سراپا احتجاج بن گئے ضیاءلطیف کے خلاف شدید غم وغصہ

لیسکو چیف کی میرٹ کیخلاف تعیناتی پر سینئر افسران سراپا احتجاج بن گئے ...

  



لاہور(صبغت اللہ چودھری) لیسکو میں 19 ویں گریڈ کے چیف انجینئر ڈویلپمنٹ ضیاءلطیف کی خلاف میرٹ بطور چیف ایگزیکٹو تعیناتی پر لیسکو کے اعلیٰ افسران میں شدید غم و غصہ پایا جاتا ہے۔ایکسٹینشن پر کام کرنیوالے سابق چیف ایگزیکٹو شرافت سیال کی برطرفی کے بعد لیسکو کے دوسرے سینئر ترین افسرجی ایم ٹیکنیکل احسان الٰہی کا نمبر آتا تھا اورسابق وزیر اعظم یوسف رضاگیلانی کی رخصتی کے وقت بھی احسان الٰہی کے پاس ایک دن کیلئے چیف ایگزیکٹو کا چارج آیا تھا ، تاہم اس مرتبہ لیسکو کی سنیارٹی لسٹ میں ساتویں نمبر پر موجود ضیاءلطیف کو چیف ایگزیکٹولیسکو کا عہدہ دیا گیا ہے جسے دیگر سینئر ترین افسران نے دل سے قبول نہیں کیا اور اس حوالے سے پاور انجینئروں میں تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے، انجینئرنگ برادری کا کہنا ہے کہ وہ سینئر افسران کی حق تلفی کے خلاف قانونی چارہ جوئی کا راستہ اختیار کر سکتے ہیں۔ ذرائع نے بتایا ہے کہ پاور سیکٹر میں اکھاڑ پچھاڑ کا عمل وفاقی وزیر پانی و بجلی احمد مختار کے قلمدان سنبھالنے کے بعد عروج پر ہے ، چند ہفتے قبل ایم ڈی پیپکو رسول خان محسود کو فارغ کر کے اپنی مرضی کا بندہ تعینات کیاگیا، مزید تبدیلیاں کرتے ہوئے انہوں نے بجلی کی 4 تقسیم کار کمپنیوں کے ان چیف ایگزیکٹو ز کو تبدیل کرنے کا فیصلہ کیا جو اپنی مدت ملازمت پوری کرنے کے بعد ایکسٹیشن پر چل رہے تھے ، ان تقسیم کار کمپنیوں میں کوئٹہ ،سکھر، ملتان اور لاہور الیکٹرک سپلائی کمپنیاں( لیسکو ) شامل ہیں، لاہور کے علاوہ دیگر کمپنیوں میں چیف ایگزیکٹو کے بعد سینئر ترین آدمی اعلیٰ عہدے پر لگایا گیا ہے تاہم لیسکو میں تعینات کئے جانیوالے نئے چیف ایگزیکٹو ضیاءلطیف کا لیسکو کی سنیارٹی لسٹ میں ساتواں نمبر ہے ، سابق چیف ایگزیکٹو لیسکو شرافت سیال کے بعد سینئر ترین افسر جنرل منیجر ٹیکنیکل احسان الٰہی ہیں، تیسرے نمبر پر فراست زمان، چیف انجینئر ٹی این جی، محمد سلیم، چیف انجینئر او اینڈ ایم ارشد رفیق اور شبیع الحسن نقوی بالترتیب چوتھے پانچویں اور چھٹے نمبر پر ہیں۔ مزید برآں لیسکو کے نئے تعینات ہونے والے چیف ایگزیکٹو ضیا ءلطیف 19 ویں گریڈ کے افسر ہیں جو کرنٹ چارج بنیاد پر بطور چیف انجینئر ڈویلپمنٹ کام کر رہے تھے انہیں ساتویں نمبر سے اٹھا کر 20 ویں گریڈ کے افسروں کو ان کے ماتحت کر دیا گیا ہے۔ذرائع نے بتایا ہے کہ پاور انجینئرز ایسوسی ایشن نے حکومت کے خلاف میرٹ فیصلے کو قبول کرنے سے انکار کر دیا ہے جبکہ سابق چیف ایگزیکٹو شرافت سیال کے بعد دیگر سینئر ترین افسران میں بھی تشویش کی لہر دوڑ گئی ہے ۔ نئے چیف ایگزیکٹو لیسکو ضیاءلطیف کے عہدہ سنبھالنے کے بعد لیسکو کے دیگر اعلیٰ ترین افسران نے انہیں مبارکباد بھی پیش نہیں کی ۔ ذرائع کا یہ بھی کہنا تھا کہ حال ہی میں جس طرح کوئٹہ میں نجی شعبے سے لگائے جانیوالے چیف ایگزیکٹو کیخلاف لیسکو افسران اور کارکنوں نے ملک گیر تحریک چلائی تھی اسی طرح لیسکو کے نئے چیف کیخلاف بھی تحریک چلائی جائے گی۔ذرائع کے مطابق ضیاءلطیف کی تعیناتی کے آرڈر بھی مستقل نہیں بلکہ عارضی چیف ایگزیکٹو کے ہوئے ہیں جس میں ”لک آفٹر“ کا لفظ استعمال کیا گیا ہے۔

مزید : صفحہ اول


loading...