مسلم لیگ (ن) اور ایم کیوا یم کی قیادت میں ملاقات رسمی ہو گی

مسلم لیگ (ن) اور ایم کیوا یم کی قیادت میں ملاقات رسمی ہو گی

  



لاہور (جاوید اقبال) ملک میں تیزی سے کی جانے والی نئی سیاسی گروہ بندیوں میں ایک مرتبہ پھر قریب آئی پاکستان مسلم لیگ (ن) اور ایم کیو ایم کے درمیان ”دیوار“ کھڑی کر دی ہے اور دوسری طرف کئی ایسے معاملات طے پاگئے ہیں جس میں ایک یہ بھی ہے کہ ایم کیو ایم مسلم لیگ (ن) کو ”کھلانے“ میں اہم ٹاسک پر کام کرے گی۔ جس کے لئے ایم کیو ایم کو سارے ”کھیل“ کے بارے ”بریف“ کر دیا گیاہے۔ اس کے لئے ایم کیو ایم کو مسلم لیگ (ن)کے لئے 8 نکات پر دیئے گئے ہیں جن پر نگران سیٹ اپ بلدیاتی انتخابات کا نیا نظام آئندہ انتخابات کے لئے حکمت عملی سوئس حکام کو خط کا معاملہ وغیرہ شامل ہیں۔ دوسری طرف اہم حلقوں کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم اور مسلم لیگ (ن) آپس میں ایک دوسرے کے لئے پانی اور آگ کے اس دریا کی مانند ہیں جن کا مستقل قریب میں ملاپ نظر نہیں آتا مگر ایم کیو ایم نے اپنے یعنی مطالبات صدر مملکت سے منظور کروانے کے لئے مسلم لیگ (ن) سے بھی ملاقاتوں کا جو پتہ کھیلا ایم کیو ایم اس میں ایک مرتبہ پھر کامیاب ہوئی تاہم اب جو مسلم لیگ (ن) سے ایم کیو ایم کی قیادت کی ملاقات ہوگی وہ رسمی اور دکھاوے کے لئے ہو گی آصف علی زرداری نے ”زہر“ نکال دیا ہے۔دوسری طرف اہم حلقوں کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم جن مقاصد کو عمل جامہ پہنانے کے لئے مسلم لیگ (ن) سے ملاقات کا جو ہتھیار سامنے لائی اس کے نتائج پورے کرچکی۔ پاکستان کی بات اور حکومت سازی میں اہم کردار ادا کرنے والے دوست ملک سعودی عرب اور اسٹیبلشمنٹ کے اگر مسلم لیگ (ن) سے کیے جانے والے معاملات طے ہو چکے ہیں تو بھی ایم کیو ایم کی مسلم لیگ ن سے ملاقات اور میل جول بڑھنے کا قوی امکان ہے اگر ایم کیو ایم حکومت سے وقتی فائدہ کراچی کی حد تک لانے اور بلدیاتی نظام کی منظوری کے لئے چاہتی تو وہ لے چکی اس تناظر میں آئندہ دنوں مسلم لیگ (ن) سے ہونے والی ایم کیو ایم کی ملاقات رسمی تو ہو سکتی ہے اس سے کسی اتحاد کی امید رکھنا بے معنی ہوگا

مزید : صفحہ اول