قومی اسمبلی کا اجلاس اے این پی کا پٹرولیم قیمتوں میں اضافہ واپس نہ لینے تک بائیکاٹ کا اعلان مسلم لیگ ن اور ایم کیو ایم کا واک آﺅٹ

قومی اسمبلی کا اجلاس اے این پی کا پٹرولیم قیمتوں میں اضافہ واپس نہ لینے تک ...

  



 اسلام آباد(ثناءنیوز ) اپوزیشن اورحکومت کی اتحادی جماعتوں نے پیر کو قومی اسمبلی میں پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں غیر معمولی اضافے، ڈرون حملوں، کراچی کوئٹہ گلگت بلتستان میں دہشت گردی و ٹارگٹ کلنگ کے واقعات کے خلاف شدید احتجاج کرتے ہوئے ایوان سے واک آﺅٹ کیا۔ پاکستان مسلم لیگ ن نے سندھ اور بلوچستان کی حکومتوں سے مستعفی ہو نے کا مطالبہ کرتے ہوئے حکومتی اتحادی ایم کیو ایم کو مشورہ دیا ہے کہ وہ ایوان سے واک آﺅٹ کر نے کی بجائے حکومت سے واک آﺅٹ کرے۔ نکتہ اعتراض پر پاکستان مسلم لیگ ن کے ڈپٹی سیکرٹری جنرل احسن اقبال نے کہا کہ حکمران اپنی شاہ خرچیوں، کرپشن کی سزا عوام کو دے رہے ہیں ان کی جیبوں پر ڈاکہ ڈالا جا رہا ہے۔ فوری طور پر پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ واپس لیا جائے۔ کراچی میں انسانوں کے خون سے ہولی کھیلی جا رہی ہے ریاست کہیں نظر نہیں آ رہی ہے کن عناصر نے کراچی میں قانون نافذ کر نے والے اداروں کو یرغمال بنالیا ہے اگر سندھ میں نظام نہیں چل رہا ہے تو پاکستان پیپلز پارٹی کو ناکامی کا اعتراف کرتے ہوئے صوبائی حکومت چھوڑ د ینی چاہیے حکومت ا قتدار کی بندر بانٹ میں لگی ہوئی ہے اور دہشت گردی کے واقعات کی ذمہ دار ہے حکومت کی ترجیحات کوئی اور ہیں امن و امان ، قومی سلامتی، معیشت کے لیے خطرہ بن چکی ہے ساڑھے پانچ کھرب کا قرضہ بارہ کھرب سے تجاوز کر گیا ہے۔ حکمرانوں کو کوئی پروا نہیں ہے ڈرون حملے جاری ہیں ہم تماشائی بنے ہوئے ہیں پاکستان مسلم لیگ ن کے ارکان نے پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف ” نامنظور، نا منظور“ کے نعرے لگائے ۔ انہوں نے سندھ کی ہندو برادری سے یکجہتی کا اظہار کیا۔ احسن اقبال نے کہا کہ ایم کیو ایم اگر متوسط طبقے کی جماعت ہے تو وہ حکومت کو چھوڑ کر اپوزیشن میں آئے پارلیمنٹ سے حکومتی اتحادی واک آﺅٹ کر نے کی بجائے حکومت سے واک آﺅٹ کریں۔ احسن اقبال کے اعلان پر پاکستان مسلم لیگ ن کے ارکان ایوان سے احتجاجاً واک آﺅٹ کر گئے۔ ایم کیو ایم کے رکن عبدالقادر خانزادہ نے بھی اپنے ارکان کے ہمراہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف احتجاج اور واک آﺅٹ کیا اور مطالبہ کیا تو حکومت پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کو واپس لے۔ حکومتی اتحادی عوامی نیشنل پارٹی نے بھی پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کے خلاف احتجاجاً قومی اسمبلی کی کاروائی کا بائیکاٹ کر دیا۔ قیمتوں میں اضافے کو واپس نہ لینے تک بائیکاٹ جاری رکھنے کا اعلان کیا ہے حکومتی اتحاد میں موجودگی پر نظر ثانی کی دھمکی بھی دے دی گئی ہے۔ ایوان میں اے این پی کے رہنما پیر حیدر علی شاہ نے نکتہ اعتراض پر کہا کہ حکومت نرخوں کے حوالے سے غلط اعداد و شمار پیش کر رہی ہے قوم کو گمراہ کیا جا رہا ہے عالمی منڈی میں جس تناسب سے قیمتوں میں ردوبدل ہو تا ہے اس تناسب سے پاکستان میں قیمتوں کا تعین نہیں ہوتا۔ جب تک قیمتوں میں اضافے کو واپس نہیں لیا جائے گا ہم کاروائی کا حصہ نہیں بنیں گے ان کے اعلان پر اے این پی کے ارکان نے قومی اسمبلی کی کاروائی کا بائیکاٹ کر دیا۔

مزید : صفحہ اول


loading...