بلوچستان بد امنی کیس : طلال بگٹی پیش ،اٹارنی جنر ل غیر حاضر ،جج ناراض ، کوئٹہ کے ڈاکٹروں کی ہڑتال ختم

بلوچستان بد امنی کیس : طلال بگٹی پیش ،اٹارنی جنر ل غیر حاضر ،جج ناراض ، کوئٹہ ...
بلوچستان بد امنی کیس : طلال بگٹی پیش ،اٹارنی جنر ل غیر حاضر ،جج ناراض ، کوئٹہ کے ڈاکٹروں کی ہڑتال ختم

  



کوئٹہ (ماینٹرنگ ڈیسک ) سپریم کورٹ کے حکم پر کوئٹہ کے ڈاکٹروں نے ہڑتال ختم کرنے کااعلان کردیا ہے ۔ چیف جسٹس کی سربراہی میں سپریم کورٹ کا تین رکنی بنچ کوئٹہ رجسٹری میں بلوچستان بد امنی کیس کی سماعت کررہاہے جہاں اٹارنی جنرل کے پیش نہ ہونے پر برہمی کا اظہارکرتے ہوئے جسٹس جواد ایس خواجہ نے کہاکہ وفاق کی سنجیدگی کا اندازہ اٹارنی جنرل کی غیر موجودگی سے کیاجا سکتا ہے اور اٹارنی جنر ل کی نظر میں بلوچستان کی کوئی اہمیت نہیں لہٰذا وہ نہیں آئے جس پر چیف جسٹس نے کہاکہ اٹارنی جنرل عدالت میں حاضر کیوں نہیں ہوئے ؟ اگر اٹارنی جنرل عدالت میں حاضر نہ ہوئے تو وفاقی سیکرٹریوں کو طلب کریں گے ۔کیس کی سماعت کے موقع پر طلال اکبر بگٹی بھی عدالت میں پیش ہوئے۔

سماعت کے دوران چیف جسٹس نے سیکرٹری ہیلتھ سے استفسار کیاکہ کوئٹہ میں ڈاکٹروں کی ہڑتال کے بارے میں کیا بنا اور کہا کہ وہ ڈاکٹروں کی عزت کرتے ہیں تاہم ہڑتال ختم کر دی جائے تو اچھا ہوگا ۔ چیف جسٹس نے ڈاکٹروں کے نمائندوں سے مکالمہ کرتے ہوئے کہا کہ احتجاج کا دوسرا طریقہ اختیار کیاجائے جس پر عدالت میں موجود ڈاکٹروں کے نمائندوں نے سپریم کور ٹ کے حکم پر ہڑتال ختم کرنے کااعلان کر دیا جبکہ بعدازاں صدر پی ایم اے بلوچستان ڈاکٹر سلطان کاکہنا ہے کہ تحفظ نہ ملنے تک ہڑتال ختم نہیں کی جائے گی اور انہوں نے عدالتی احکامات ماننے سے انکارکر دیا ہے۔

چیف جسٹس نے سی سی پی او استفسار کرتے ہوئے کہاکہ ڈاکٹر غلام رسول کے اغوا میں ملوث ملزمان کیوں گرفتار نہیں ہوئے جس پر سی سی پی او نے اپنے جواب میں کہاکہ اغوا کار پیشہ ور ہیں اور ان کا نیٹ ورک ہے۔

مزید : کوئٹہ


loading...