ڈیڈ لاک ختم ،تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے درمیا ن مذاکرات

ڈیڈ لاک ختم ،تحریک انصاف اور عوامی تحریک کے درمیا ن مذاکرات

  

اسلام آباد (خصوصی رپورٹ)اپوزیش جماعتوں کے جرگے کی کوششیں ر گ لائیں اور حکومت،تحریک ا صاف اور پاکستا عوامی تحریک کے درمیا مذاکرات میں پیدا ہو ے والا ڈیڈلاک ختم ہوگیا جس کے بعد مذاکرات بحال ہوگئیتاہم حکومت اور تحریک ا صاف کے مذاکرات میں کوئی پیشرفت ہیں ہوسکی اس لئے آج پھر بات چیت ہوگی۔ اسی طرح عوامی تحریک کے ساتھ بھی حکومتی کمیٹی کی گفت وش ید زیادہ آگے ہ بڑھ سکی، ا دو وں کے مذاکرات بھی آج پھر ہوں گے، تفصیل کے مطابق حکومت اور تحریک ا صاف کے درمیا مذاکرات جہا گیرترے کی رہائش گاہ پر اور حکومت اور عوامی تحریک کے درمیا مذاکرات رحما ملک کے گھر شروع ہوگئے۔حکومت اور تحریک ا صاف کی مذاکراتی ٹیموں کے درمیا ہو ے والے مذاکرات میں کوئی پیش رفت ہیں ہوسکی۔ تحریک ا صاف کی مذاکراتی کمیٹی کے رک عارف علوی ے بتایا کہ مذاکرات میں کچھ پیش رفت ہیں ہوئی اسد عمر ے بتایا کہ آج پھر مذاکرات ہو گے ہو سکتا ہے آج کوئی پیش رفت ہو جائے۔اس سے پہلے اپوزیش جماعتوں کے جرگے کے ماء دوں ے امیر جماعت اسلامی سراج الحق کی سربراہی میں تحریک ا صاف کے ماء دوں سے ملاقات کی اور ا ہیں حکومت کے ساتھ مذاکرات بحال کر ے پر آمادہ کیا۔ سراج الحق کے ساتھ لیاقت بلوچ، فرید پراچہ، رحما ملک، غازی گلاب جمال، کلثوم پروے اور میاں محمد اسلم بھی تھے۔اس بات چیت میں تحریک ا صاف کی عرف سے شاہ محمود قریشی ،عارف علوی، پرویز خٹک اور اسد قیصر شریک ہوئے۔تحریک ا صاف اپوزیش جماعتوں کے مذاکرات کے بعد صحافیوں سے گفتگوکرتے ہوئے امیر جماعت اسلامی سراج الحق ے کہا کہ سیاسی بحرا کے حل کے لئے70فیصد کامیابی حاصل کر لی ہے،وفاقی وزراء کے تلخ بیا ات ہمارے لئے مشکلات پیدا کر رہے ہیں،وزیر اعظم واز شریف وزراء کو تلخ بیا ی سے روکیں،فریقی کا رویہ مثبت اور دو وں طرف معاملات حل کر ے کا عزم موجود ہے۔ا ہوں ے کہاکہ مذاکرات میں ہر لمحہ ئی کامیابیاں مل رہی ہیں ۔ دو وں طرف معاملات کا حل کال ے کے لیے ایک عزم موجود ہے اور فریقی کا رویہ کافی حد تک مثبت ہے ، اگرچہ مشکلات اور راستے میں سپیڈ بریکر ہیں مگر ہم ے دو وں فریقوں کو ہاتھ پکڑ کر ایک دوسرے کے قریب کیاہے اور 70فیصد معاملات حل ہو چکے ہیں ۔ اب اس لمحہ کا ا تظار ہے جب بحرا مکمل طور پر ختم ہو جائے گا۔ ا ہوں ے کہاکہ جگہ جگہ پی ٹی آئی اور پی اے ٹی کے کارک وں کی گرفتاریوں کی وجہ سے بھی مذاکرات کو آگے بڑھا ے میں مشکلات پیش آرہی ہیں ۔ حکومت کو ہ صرف گرفتاریاں ب د کردی ی چاہئیں بلکہ پہلے سے گرفتار کیے گئے سیاسی کارک وں کو بھی کھلے دل کا مظاہرہ کرتے ہوئے رہا کردی اچاہیے ۔ ا ہوں ے کہاکہ ا دھیرا اور مایوسی ختم ہو چکی ہے اور امید کی شمع روش ہے ۔ فریقی جمہوریت ، آئی اور پارلیم ٹ کی بالادستی پر یقی رکھتے ہیں ۔ وہ وقت جلد آ ے والا ہے جب قوم کو اس بحرا سے جات کی خوشخبری ملے گی ۔ اس موقع پر تحریک ا صاف کے وائس چیئرمی شاہ محمود قریشی کا کہ ا تھا کہ حکومتی مذاکراتی ٹیم سے بھی بات چیت ہوگی، پی ٹی آئی پارلیم ٹ کو مقدس جگہ سمجھتی ہے اور واضح کردی ا چاہتے ہیں کہ پارلیم ٹ کے احاطے میں تحریک ا صاف کا کوئی کارک موجود ہیں اگر عوامی تحریک کے کارک ا وہاں موجود ہیں تو ا سے درخواست ہے کہ پارلیم ٹ کے احاطے کو خالی کردیں۔ جرگے کے رک رحما ملک کا کہ ا تھا کہ تحریک ا صاف کے کسی ماء دے ے آج سخت بات ہیں کی اور وزیراعظم سے درخواست ہے کہ اپ ی مذاکراتی ٹیم کو پاب د کریں کے مذاکرات کے دورا ت قید کا سہارا ہ لیں جبکہ ا ہوں ے عمرا خا اور طاہرالقادری سے درخواست کی کہ کارک وں کو ہدایت کریں کہ پارلیم ٹ کا احاطہ فوری خالی کیا جائے ۔ بدھ کی شام امیر جماعت اسلامی سراج الحق کی سربراہی میں لیاقت بلوچ، رحما ملک، فرید پراچہ، سی یٹر کلثوم پروی ، جی جی جمال اور میاں محمد اسلم پر مشتمل اپوزیش جماعتوں کے سیاسی جرگے ے عوامی تحریک کی مذاکراتی کمیٹی سے بھی ملاقات کی اس ملاقات میں عوامی تحریک کے صدر رحیق عباسی، خرم واز گ ڈا پور، مسلم لیگ (ق) کے طارق بشیر چیمہ، س ی تحریک کے حامد رضا اور وحدت المسلمی کے راجہ اصر عباس ے عوامی تحریک کی ماء دگی کی۔ ملاقات کے بعد صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے سراج الحق ے کہا کہ ہماری کوششوں سے حکومت اور فریقی کے درمیا مذاکرات میں ڈیڈ لاک ختم ہوگیا ہے لیک ابھی م زل تک پہ چ ے کیلئے طویل راستہ طے کر ا ہوگا جس میں بڑی رکاوٹیں بھی موجود ہیں۔ فریقی ایک حد تک اپ ے موقف پر بھی ڈٹے ہوئے ہیں۔ ا ہوں ے کہا کہ اب ہم مل بیٹھ کر بحرا کا حل کال ے کی کوشش کری گے۔ ا ہوں ے کہا کہ اگر حکومت ، عوامی تحریک اور تحریک ا صاف آپس میں مل بیٹھ کر مسئلہ حل کرلیں تو پوری قوم اور اپوزیش جماعتیں ا ہیں شاباش دی گی۔ جہاں مشکل آئی جرگہ اپ ا رول بھی ادا کرے گا۔ ا ہوں ے کہا کہ مذاکرات کی بحالی بڑی کامیابی ہے اس ضم میں ہماری درخواست قبول کرلی گئی ہے۔ فریقی آپس میں مطالبات پیش کری گے اور درمیا ی راستہ کال کر ملک کو بحرا سے کال ے کی کوشش کری گے۔ ا ہوں ے کہا کہ اس معاملے کے حل کیلئے طرفی کو کچھ قربا یاں دی ا ہو گی جو لچک دکھائے گا اسے زیادہ مبر ملیں گے۔ ا ہوں ے کہا کہ ہم حکومت سے درخواست کری گے کہ وہ بھی کچھ سہولتیں دے، گرفتار لوگوں کو رہا اور پکڑ دھکڑ کا سلسلہ ب د کیا جائے، مقدمات کے عمل سے پیچھے ہٹا جائے۔ سراج الحق ے جاوید ہاشمی کے الزامات کا جواب دی ے سے گریز کرتے ہوئے کہا کہ پارلیم ٹ کے ا در موجود لوگ اصلاح چاہتے ہیں اور آگ بجھا ے کی کوشش کررہے ہیں سب کی خواہش ہے کہ ملک اور جمہوریت چلتے رہیں۔ اس موقع پرعوامی تحریک کے صدر رحیق عباسی ے کہا کہ اپوزیش جماعتوں کے جرگے سے تفصیلی بات چیت ہوئی ہے ہم ے اپ ا موقف ا ور مطالبات ا کے سام ے رکھے ہیں، ہم جدوجہد کو تیجہ خیز ب ا ا چاہتے ہیں۔ ا ہوں ے کہا کہ اس وقت قوم ہیجا اور مشکل میں ہے، ہم مذاکرات کے ذریعے مسائل کا حل چاہتے ہیں۔ ا ہوں ے کہا کہ سیاسی جرگے کی خواہش تھی کہ ڈیڈ لاک ختم ہو، ہم ے اس کا احترام کیا ہے۔ ہم ے اپوزیش جرگے کو کہا ہے کہ حکومت سا حہ ماڈل ٹاؤ کی تحقیقات کیلئے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم تشکیل دے، ا تخابی دھا دلی اور الیکش کمیش کے معاملے پر جوڈیشل کمیش قائم کیا جائے۔ ا ہوں ے کہا کہ ہم ے وزیراعظم اور وزیراعلیٰ پ جاب کا مطالبہ بھی سام ے رکھا ہے اور سا حہ ماڈل ٹاؤ کی روش ی میں اس کی وجہ بھی بتائی ہے۔ ہم ے اپ ے اصلاحاتی ایج ڈے پر بھی بات کی اور قومی اصلاحاتی قو صل ب ا ے کی تجویز دی ۔ ہم چاہتے ہیں کہ عوام کو دکھوں سے جات، ا صاف دہلیز پر دیا جائے اس کے ساتھ ساتھ غربت، بے روزگاری اور استحصال کا خاتمہ کیا جائے۔ ا ہوں ے کہا کہ طع ہ دیا جاتا ہے کہ ہم آئی اور جمہوریت کے خلاف ہیں ہم ے واضح کیا ہے کہ اپوزیش کا جرگہ اگر ہمارے کسی مطالبے کو آئی ، قا و ، جمہوری روایات اور عدل و ا صاف کے پیما وں پر ہیں پاتا یا کوئی مطالبہ جائز ہیں ہے تو ہمیں بتایا جائے ہم اس سے دستبردار ہو ے کیلئے تیار ہیں۔ ہمارے مطالبات آئی ، قا و اور جمہوریت کے مطابق ہیں۔ یہ جرگہ ہمارے مطالبات حکومت کے سام ے پیش کرے گا حکومتی ٹیم سے بھی اپوزیش جرگے کی موجودگی میں مذاکرات ہو گے۔ اس موقع پر پیپلز پارٹی کے رہ ما رحما ملک ے کہا کہ ملک کا ہر شہری چاہتا ہے کہ موجودہ سیاسی بحرا حل ہو، ڈیڈ لاک ختم کر ے پر ہم عمرا خا اور طاہر القادری کے شکر گزار ہیں۔ حکومت اور عوامی تحریک کے مذاکرات اپوزیش جرگے کی موجودگی میں ہو گے۔ ا ہوں ے کہا کہ ہم ے عوامی تحریک سے درخواست کی ہے کہ پارلیم ٹ ہاؤس کے ا در ب ائی گئی خیمہ بستی ختم کی جائے جس پر ا ہوں ے غور کی یقی دہا ی کرائی ہے۔ عوامی تحریک ے یہ بھی کہا ہے کہ جرگہ جو مطالبات اجائز سمجھے اسے کال دے۔ ا ہوں ے کہا کہ سیاسی بحرا کے حل کیلئے سراج الحق کی جدوجہد اور کردار قابل ستائش ہے۔ ملک کی ساری جماعتیں جمہوریت کے ساتھ کھڑی ہیں اور بحرا کا حل چاہتی ہیں، ہم آصف علی زرداری کی مفاہمت کو لیکر آگے بڑھتا چاہتے ہیں ۔ ا ہوں ے کہا کہ حکومت سے درخواست ہے کہ دھر ے کے شرکاء کی کھا ے پی ے کی اشیاء اور ادویات ہ روکی جائیں ۔ اس موقع پر سی یٹر کلثوم پروی ے کہا اپوزیش کا سیاسی جرگہ یک یتی اور خلوص کے ساتھ کام کررہا ہے۔ تحریک ا صاف اور عوامی تحریک ے بھی مثبت طرز عمل کا مظاہرہ کیا ہے ہمیں امید ہے کہ اس خلوص یت کا ثمر ملے گا اور کوئی راستہ کل آئے گا۔

مزید :

صفحہ اول -