وزیر اعظم کو اب لمبی چھٹی پر بھیجیں گے،حلیم عادل شیخ

وزیر اعظم کو اب لمبی چھٹی پر بھیجیں گے،حلیم عادل شیخ

  

کراچی (اسٹاف رپورٹر) مسلم لیگ سندھ کے صدر حلیم عادل شیخ نے کہا ہے کہ وزیر اعظم کو اب ایک ماہ کی نہیں بلکہ لمبی چھٹی پر بھیجیں گے ۔جن لوگوں نے شریف برادران کو کرپشن فری کا سرٹیفیکیٹ دیا ہے عوام اب ان جماعتوں کو بھی اسی طرح آڑے ہاتھوں لے گی کیونکہ چور کا ساتھی ہمیشہ چور ہوتا ہے ۔حکومت اپنی تمام تر ناکامیاں دھرنے والوں کی جھولی میں ڈالنا چاہتی ہے۔ ملک کے حالات اس نہج پر ہیں کہ دوسرے ممالک ہمارے حالات دیکھ کر عبرت پکڑ رہے ہیں ۔ملک میں آئے روز مہنگائی ،غربت اور درندگی میں اضافہ معمول بن چکا ہے ۔ حکومت کی تنخوادار جماعتیں وزیر اعظم کو بچانے کے لیے بھاگ دوڑ کررہی ہے ۔ملک میں بے روزگاری اور مہنگائی کی ماری عوام اپنے لخت جگر فروخت کرنے پر مجبور ہے جبکہ ملک میں چند سو خاندانوں کی دولت میں گھنٹوں کے حساب اضافہ ہورہا ہے ریاست کے وسائل کو دونوں ہاتھوں سے لوٹا جارہا ہے ۔حکومت کا دامن ان تمام گناہوں سے لبریز ہے ملک میں مہنگائی بے روزگاری اور لاقانونیت اس ملک کے بڑے مسئلے ہیں جنھیں حل کرنے میں حکومت سنجیدہ ہونے کی کوشش بھی نہیں کرنا چاہتی۔ان خیالات کا اظہار انہوںنے مسلم لیگ سندھ کے صوبائی سیکرٹریٹ سے جاری کردہ بیان میں کیا۔حلیم عادل شیخ نے کہا کہ عوام موجودہ کرپٹ حکومت کی غلامی سے نجات چاہتی ہے ،ملک میں کوئی کام ایسا نہیں ہے جس میں رشوت کا عمل دخل نہ ہو ملک میں میرٹ کی دھجیاں اڑائی جارہی ہیں اور ان تمام برائیوں کے ذمہ دار حکمران ہیں جو اپنے ہر جائز ناجائز کاموں کے لیے عوام کواستعمال کررہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ ملک میں کہیں تاجر برادری اپنے کاروبار کا رونا رورہی ہے تو کہیں اساتذہ سڑکوں پر نکلے ہوئے ہیں ملک میں موجود ہر چوک ڈی چوک بنا ہوا ہے کوئی ایک شخص بھی اس بات کو برداشت کرنے کو نہیں ہے کہ شریف برادران ان پر مسلط رہیں۔دھرنوں سے نجات حاصل کرنا اب حکومت کے بس میں نہیں رہا اسلام آباد کے دھرنے ختم بھی ہوگئے تو نئے دھرنے کہیں اور شروع ہوجائیں گے اس مسئلے کا اختتام اسی روز ہوگا جب یہ حکومت اختتام پزیر ہوگی۔اس وقت پی پی اور ن لیگ باری باری کا کھیل کھیل رہی ہیں مگر اب آس لگانے والی جماعتوں کو ہم بتادیتے ہیں کہ اب ملک کی حکمرانی دو خاندانوں کی لونڈی نہیں رہی ہے عوام باشعور ہوچکے ہیں اب ملک میں جو بھی حکمرانی کریگاوہ خالصتاً عوام کے ووٹوں سے ہی آئے گا۔انہوںنے مزید کہا کہ حکومت پارلیمنٹ میں ایسی کوئی بات نہیں سنتی جو وزیر اعظم کی استعفے سے متعلق کی گئی ہو،ان کی خواہش ہے کہ ان کی بادشاہت اسی انداز میں چلتی رہے ۔

مزید :

صفحہ آخر -