ریلوے میں تقرریوں کے معاملے پر سرد جنگ شروع ہو گئی

ریلوے میں تقرریوں کے معاملے پر سرد جنگ شروع ہو گئی

  

لاہور(سٹاف رپورٹر)ریلوے میں شعبہ ٹریفک اینڈ کمرشل ،سول اور مکینیکل انجینئرنگ میں تقرری کے معاملے پر سرد جنگ چھڑ گئی ہے اس معاملے کو جنرل منیجر آپریشنز جاوید انور بوبک کے سامنے اٹھانے کا فیصلہ کیا گیا ہے ۔ذرائع نے بتایا کہ اس وقت ریلوے کی 7آپریشنل ڈویژن ہیں یہاں پر زیادہ تر ٹرین آپریشن کو مثبت انداز میں چلانے کےلئے ٹریفک اینڈ کمرشل اور مکینکل کے آفیسر کو ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ کے عہدے پر تعینات کیا جاتا ہے لیکن سابق جنرل منیجر آپریشنز نے شعبہ سول سے وابستہ ہونے کے باعث پانچ ڈویژنوں میں شعبہ سول کے افسروں کو تعینات کیا ہے ۔شعبہ سول انجینئر نگ سے وابستہ جو آفیسر ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ کے عہدوں پر لگے ہیں ان میں ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ کراچی نثار میمن،ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ سکھر فرخ تیمور غلزئی ،ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ کوئٹہ فیض بگٹی،ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ ملتا ن شارخ اورڈویژنل سپرنٹنڈنٹ پشاور علی آفریدی شامل ہیں ۔جبکہ دوڈویژنوں میں شعبہ ٹریفک اینڈکمرشل اور مکینیکل کے آفیسر تعینات ہیں ان میں شعبہ ٹریفک اینڈکمرشل سے تعلق رکھنے والے لاہور ڈویژن کے ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ عبدالحمید رازی اور شعبہ مکینکل سے وابستہ ڈویژنل سپرنٹنڈنٹ ملتان منورخان شامل ہیں۔ذرائع کا کہناہے کہ شعبہ ٹریفک اینڈکمرشل اور شعبہ مکینکل کے افسروں کا نظریہ یہ ہے کہ ان شعبوں سے وابستہ افراد کا تعلق براہ راست ٹرین آپریشن سے ہوتا ہے فریٹ اور پسنجر سسٹم کو بہترانداز میں چلانے کے پیش نظر ان کی یہاں تقرری ضروری ہے ۔ذرائع کا کہنا ہے کہ متاثرہ شعبے اس معاملے کو جنرل منیجر آپریشنز کے سامنے اٹھائیں گے اور ماضی کے فیصلوں پر نظرثانی کے لئے درخواست کریں گے۔

سرد جنگ

مزید :

صفحہ آخر -