پارلیمنٹ ”شاید“آزاد ہے، چور دروازوں سے ایوان میں آرہے ہیں :سینیٹر حاجی عدیل

پارلیمنٹ ”شاید“آزاد ہے، چور دروازوں سے ایوان میں آرہے ہیں :سینیٹر حاجی عدیل
پارلیمنٹ ”شاید“آزاد ہے، چور دروازوں سے ایوان میں آرہے ہیں :سینیٹر حاجی عدیل

  

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک )عوامی نیشنل پارٹی کے سینیٹر حاجی عدیل نے کہا ہے کہ پاکستا ن آزاد ملک ہے اور پارلیمنٹ بھی ”شا ید “ آزاد ہے ، چور دروازوں سے آ رہے ہیں ،   مل کر کرپشن کیخلاف جہاد کرنا ہوگا ، جہاد بلٹ پروف اور ایئر کنڈیشنڈ کنٹینرز میں بیٹھ کر نہیں کیا جاتا،ڈاکٹر طاہرالقادری اپنے 30 ہزار گرفتار کارکنوں کے نام پتے بتادیں میں انہیں رہا کروادوں گا۔

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے حاجی عدیل کا کہنا تھا کہ خیبر پختونخواہ میں انتخابی نتائج پر تحفظات کے باوجود ہم نے جمہوریت کو چلنے دیا، پارلیمنٹ کے باہر دہشت گرد کھڑے ہیں جو لوگوں کو چیک کررہے ہیں،دہشت گر دکبھی پی ٹی وی اور کبھی پارلیمنٹ پر قبضہ کر لیتے ہیں ، ایسے راستوں سے پارلیمنٹ آنا پڑتا ہے جو کبھی دیکھے بھی نہیں تھے، پارلیمنٹ کے مرکزی دروازے بند ہیں اور ٹینٹ لگے ہیں، ہم چور دروازوں سے پارلیمنٹ آتے ہیں اور چور دروازں سے جاتے ہیں،وزیر اعظم اور ارکان عام راستوں سے نہ آسکیں تو بہادر شاہ ظفر یاد آتے ہیں ۔اُن کا مزید کہنا تھا کہ باغیوں کی بات کی جاتی ہے، باغی وہ نہیں ہوتے جو پارٹیاں بدل لیں۔ انہوں نے عمران خان پر تنقید کر تے ہوئے کہا کہ کسی زمانے میں نوازشریف کاباﺅنسر عمران خان کو لگ گیا تھا، وہ اس کا بدلہ اب منتخب وزیراعظم سے لے رہے ہیں،ایک زمانہ تھا جب عمران خان ہمار ا ہیرو تھا ، شوکت خانم ہسپتال کے لےے پنجاب حکومت نے زمین دی تھی ۔

حاجی عدیل نے کہا کہ ہمیں بھی حکومت سے شکایتیں ہیں،آج بھی حکومت کے وزیر سینیٹ میں نہیں آتے ہیں، کاش دھرنے والے وزیراعظم کی موجودگی کو مسئلہ نہ بناتے، ہمارے ہاں خاندان حکومت کررہے ہیں ، اسے نئی نسل پسند نہیں کرتی۔ حاجی عدیل کا کہنا تھا کہ جنگ لڑتی فوج کو دوسرے معاملے میں شامل کرنا طالبان خان کا ہی کام ہوسکتا ہے، ایک طرف تو فوج دہشت گردوں کے خلاف لڑرہی ہے، ایسے موقع پر فوج اور حکومت کو کسی دوسرے معاملے میں ملوث کرنا کسی عام پاکستانی کا کردار نہیں ہوسکتا ہے ۔

طاہرالقادری پر تنقید کرتے ہوئے حاجی عدیل نے کہا کہ وہ مسئلے کو بڑھاوا دینے کے ماہرہیں، قانون کی خلاف ورزی کرنے والوں کے ساتھ قانون کے مطابق عمل کیا جائے،منہاج القرآن ان افراد کے نام اور پتے دے جو 17جون کو ماڈل ٹاﺅن میں مارے گئے ۔ حاجی عدیل کا کہنا تھا کہ حکومت سے استدعا ہے کہ بات چیت کریں لیکن لوگوں کی تکلیف کااحساس کریں، جمہوریت اسطرح نہیں چلتی، بادشاہت بھی اسطرح نہیں چلتی، ہم اس حکومت ، آئین اور جمہوریت کے ساتھ ہیں ، ، موٹر ویے پر ان لوگوں میں دیگ تقسیم کی جا رہی ہیںلیکن حکومت ہتھیار پھینک چکی ہے۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -