دشمن ملک کا اتنا نقصان نہیں کر سکے جو ان دونوں رہنماﺅں نے کر دیا ہے: احسن اقبال

دشمن ملک کا اتنا نقصان نہیں کر سکے جو ان دونوں رہنماﺅں نے کر دیا ہے: احسن ...
 دشمن ملک کا اتنا نقصان نہیں کر سکے جو ان دونوں رہنماﺅں نے کر دیا ہے: احسن اقبال

  

 اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک )وزیر منصوبہ بندی اور ترقی احسن اقبال نے پارلیمان پر حملہ کرنے والوں کو مثالی سزا اور پارلیمنٹ کی مدت پانچ سال رہنے کی تجویز دیتے ہوئے کہاکہ  دشمن ملک کا اتنا نقصان نہیں کر سکے جو ان دونوں رہنماﺅں نے کر دیا ہے ، انہوں نے حکومت کی چودہ ماہ کی محنت ضائع کر دی ، دھرنے والے سو سال بھی جمہوریت کا کچھ نہیں بگاڑ سکتے ہیں ۔

پارلیمنٹ کے مشترکہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے مسلم لیگ ن کے رہنماءاحسن اقبال کا کہنا تھا کہ پوری دنیا میں پاکستان کی جگ ہنسائی ہو رہی ہے، جمہوری ادوار میں کسی نے پارلیمنٹ اور پی ٹی وی پر حملہ نہیں کیا، پی ٹی وی پر حملے سے 40 منٹ نشریات معطل رہیں، ملک میں کنٹینربند انقلاب لایا جا رہا ہے۔ان کا مزید کہنا تھا کہ دو لیڈروں نے پوری قوم کو یرغمال بنایا ہوا ہے، ایک کنٹینر سے ملک میں عجیب انقلاب لانے کی باتیں کی جا رہی ہیں، ماضی میں کبھی کسی کو اس عمارت پر حملہ کرنے کی ہمت نہیں ہوئی ، پارلیمنٹ پر حملہ کرنیوالوں کو سزا ملنی چاہئے تاکہ آئندہ کوئی جرات نہ کرے۔ان کا کہنا تھا کہ 4 سیاستدانوں کے ٹولے نے ملک کو نئے بحران سے دوچار کر دیا ہے ،چوہدری برادران اور شیخ رشید کے ساتھ مل کر بھی یہ دونوں رہنماءناکام ہو گئے ہیں لیکن عام آدمی نے اس سازش کا ایندھن بننے سے انکار کر دیا، حکومتی بینچوں سے زیادہ تقدس اپوزیشن بنچوں کا ہے۔

انہوں نے کہا کہ طاہر القادری کی اپوزیشن لیڈر سے متعلق باتیں قابل مذمت ہیں، پارلیمنٹ کو دھوبی گھاٹ بنا دیا گیا ہے، احسن اقبال نے کہا کہ یوم آزادی کو ملک کی تقسیم کا دن بنا دیا گیا، جس ملک دشمنی کا اظہار تحریک انصاف اور عوامی تحریک نے کیا ان سے بڑھ کر ملک دشمنی کا اظہار تو ہمارے دشمن ملک اربوں ڈالر خر چ کر کے بھی نہیں کر سکتے تھے ،پوری دنیا میں پاکستان کی جگ ہنسائی ہو رہی ہے،دھرنے کے شرکاءاسلام آباد میں آ کر فقیروں کی طرح بیٹھ گئے،انہوں نے ہماری جمہوریت کو لیبیا اور بولیویا کی صف میں لا کھڑا کیا ہے ۔

احسن اقبال کا کہنا تھا کہ عمران خان اور طاہر القادری ٹی وی پر منتیں کر تے رہے ،ان کا دعوی تھا کہ دس لاکھ لوگ لے کر آئیں گے ، شرکاءچودہ گھنٹے لاہور میں پھر تے رہے ، گوجرانوالہ میں خدا کے واسطے دیئے گئے کہ ہمارے مارچ میں آ جاﺅ لیکن عام آدمی نے سازش کا حصہ بننے سے انکار کر دیا ،طاہر القادری توپہلے ہی کہ چکے ہیں کہ میں آئین اور ایون کو نہیں مانتا ہوں ، اب دھرنے میں لوگ لانے کے لیے عمران خان کی جانب سے یو سی کی ٹکٹوں کا واسطہ دیا جا رہا ہے ،308ارکان پر 34ممبران کو فوقیت نہیں دی جاسکتی ہے ۔

مزید :

اسلام آباد -اہم خبریں -