این بوتھم نے آئی پی ایل کو کرپشن کا گڑھ قرار دیتے ہوئے اسکے خاتمے کا مطالبہ کر دیا

این بوتھم نے آئی پی ایل کو کرپشن کا گڑھ قرار دیتے ہوئے اسکے خاتمے کا مطالبہ کر ...
این بوتھم نے آئی پی ایل کو کرپشن کا گڑھ قرار دیتے ہوئے اسکے خاتمے کا مطالبہ کر دیا

  

لندن (مانیٹرنگ ڈیسک )عظیم انگلش آل راﺅنڈر اور سابق کپتان ای این بوتھم نے انڈین پریمیئر لیگ( آئی پی ایل) کو عالمی کرکٹ کے مستقبل کے لیے بڑا خطرہ قرار دیتے ہوئے اسے ختم کرنے کا مطالبہ کر دیا ہے۔لارڈز میں سپرٹ آف کرکٹ پر لیکچر دیتے ہوئے بوتھم نے عالمی کرکٹ پر آئی پی ایل کے اثرات اور اس کے باعث کرکٹ میں کرپشن کے پھیلاﺅ پر شدید تشویش کا اظہار کرتے ہوئے کہا کہ وہ آئی پی ایل کے حوالے سے کافی فکرمند ہیں اور محسوس کرتے ہیں کہ اسے ہونا ہی نہیں چاہیے کیونکہ یہ دنیائے کرکٹ میں ترجیحات بدل رہا ہے،کھلاڑی اس کے سامنے غلام ہیں اور منتظمین اسکے آگے جھکتے ہیں۔عظیم آل راﺅنڈر نے تنقیدی سوال کیا کہ یہ کیسے ہو سکتا ہے کہ آئی پی ایل سال میں دو ماہ کے لیے دنیا کے بہترین کھلاڑیوں کی خدمات حاصل کرے اور ان بورڈز کو ایک پائی بھی ادا نہ کرے جو ان کھلاڑیوں کو منظر عام پر لائے، آئی پی ایل کے کھیل کے مستقبل پر انتہائی خطرناک اثرات مرتب ہوں گے، کرپشن اپنے آپ میں ایک بڑا مسئلہ ہے لیکن اس لیگ کی وجہ سے بیٹنگ اور فکسنگ کےلئے بہترین مواقع فراہم کرتا ہے۔ماضی کے عظیم آل راﺅنڈر نے کرپشن کے الزام میں پکڑے جانے والے کھلاڑیوں کی وجہ سے آئی سی سی سے سوال کیا کہ دوسرے درجے کے کھلاڑیوں کو کیا جیل میں ڈالنے سے یہ مسئلہ حل ہو جائے گا؟،سانپ کو مارنے کے لیے اس کا سر کچلنا پڑتا ہے،آئی سی سی اینٹی کرپشن یونٹ مسئلے کی جڑ تک پہنچے اور ضرورت پڑنے پر اس میں ملوث بڑے ناموں کو سامنے لائے۔واضح رہے کہ سٹار بننے سے قبل این بوتھم کرکٹ کے گھر لارڈز میں گراﺅنڈ سٹاف بوائے تھے اور پھر اسی میں لوگوں نے انہیں انگلش ٹیم کی قیادت کرتے دیکھا۔

مزید :

کھیل -