دنیا کی سب سے بڑے ہاتھوں والی خاتون

دنیا کی سب سے بڑے ہاتھوں والی خاتون
دنیا کی سب سے بڑے ہاتھوں والی خاتون

  

لندن(نیوزڈیسک)اس تھائی خاتون کے بارے میں خیال کیا جاتا ہے کہ یہ دنیا کی سب سے بڑے ہاتھوں والی عورت ہے اس کے ایک ہاتھ کا وزن ایک کا وزن تقریباً ڈھیڑ پتھر کے برابر ہے۔ تھائی لینڈ کے صوبے (Surin) کی رہائشی دکان مالک یہ خاتون جس کا نام ڈانگ جے سماکس میم ہے جو پچاس سال سے زائد عرصہ سے اس خطرناک مرض میں مبتلا ہے جس سے اس کے ہاتھ مستقل طور پر سوج کر بہت بڑے ہو گئے ہیں۔ ماہرین کا خیال ہے کہ انسٹھ سالہ یہ خاتون دنیا کی واحد خاتون ہے جو اس بیماری میں مبتلا ہے جسے میکرو ڈیسٹروفیا لپومیسٹوسا کہتے ہیں جس میں چربی کی بہت زیادہ مقدار جمع ہو کر دونوں ہاتھوں سمیت پورے بازوﺅں میں پھیل جاتی ہے اس بیماری سے اسے معمولی کام مثلاً بالوں میں کنکھی کرنا اوربال دھونے میں سخت تکلیف کا سامنا ہوتا ہے اس نے اپنا تمام تر بچپن اسی تکلیف کے ساتھ گزارا ہے اس نے اپنی زندگی کے ابتدائی بیس سال انتہائی شرم میں گزارے دیے یہ خاتون ایک گراسری کی دکان چلاتی ہے۔ ڈنگ جے نے دنیا بھر کے ڈاکٹرز کی نگاہ اپنی طرف مبذول کروائی ہے بہت سے ماہرین نے اس کی سرجری کی کوششیں بھی کیں تاکہ اس کے ہاتھوں کی سوجن کم کی جا سکے لیکن آج تک کسی کو کامیابی نہیں ہو سکی۔

خاتون نے بتایا ہے کہ اس کے ہاتھ اس قدر وزنی ہیں کہ وہ انہیں کنگھی کرنے اور بال شیمپو کرنے کی غرض سے اٹھا بھی نہیں سکتی اور اس کے لئے کپڑے بدلنا بھی انتہائی تکلیف دہ عمل ہے۔ بعض ڈاکٹرز کا خیال ہے کہ اس تکلیف کا آخری حل یہی ہے کہ اس خاتون کے ہاتھ کاٹ دیئے جائیں اگر یہ ہر جگہ آزادی سے آنا جانا چاہتی ہے تو کہ اس کے ہاتھ ہمیشہ کے لئے کاٹنا ہوں گے لیکن ڈانگ جے کا کہنا ہے کہ میں اپنے ہاتھ نہیں کٹوانا چاہتی۔

مزید :

ڈیلی بائیٹس -