جنسی درندگی کی انتہاء، بھارت میں لڑکی کی نیم عریاں لاش مل گئی

جنسی درندگی کی انتہاء، بھارت میں لڑکی کی نیم عریاں لاش مل گئی
جنسی درندگی کی انتہاء، بھارت میں لڑکی کی نیم عریاں لاش مل گئی

  

نیودہلی (نیوز ڈیسک) بھارت میں کوئی دن ایسا نہیں جاتا کہ گینگ ریپ کا کوئی بھیانک واقع پیش نہ آتا ہو۔ تازہ ترین اقعہ مغربی بنگالہ میں پیش آیا ہے جہاں ایک 15 سالہ لڑکی کو اپنے والد پر ظلم کے خلاف آواز اٹھانے کی پاداش میں اجتماعی آبروریزی کرنے کے بعد قتل کردیا گیا۔ جلپے گوری ضلع کے ایک گاﺅں سے تعلق رکھنے والی لڑکی کے والد کو گاﺅں کی پنچایت نے ادھار واپس نہ کرنے پر تشدد کی سزا سنائی تھی۔ لڑکی کے احتجاج کرنے پر اسےخوفناک دھمکیاں دی گئیں، سب کے سامنے بے عزت کیا گیا اور اس کے بعد یہ صرف اس کے والد کو زدوکوب کیا گیا بلکہ لڑخی کو متعدد مردوں نے اجتماعی جنسی درندگی کا نشانہ بنایا اور پھر جان سے ہی ماردیا۔ مظلوم لڑکی کی لاش صبح کے وقت قریبی ریلوے لائن کے قریب پھینک دی گئی۔ گاﺅں کے صاحب حیثیت لوگوں کے ظلم کا نشانہ بننے والے لاچار والد نے پولیس کو دی گئی درخواست میں پنچایت میں شامل 13 افراد کو اپنی بچی کی آبروریزی کا ملزم قرار دیا ہے۔ اگرچہ بھارت میں اس طرح کے روح فرساواقعات روز کا معمول ہیں لیکن بدقسمتی سے مجرمان کو تحفظ اور مظلموموں کو ہراساں کرنا بھی پولیس کا معمول بن چکا ہے۔

مزید :

انسانی حقوق -